The news is by your side.

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد زلمی پشاور زلمی شکست دے دی

دبئی: پاکستان سپر لیگ کے 23ویں میچ میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد پشاور زلمی کو 6 وکٹوں سے شکست دے کر فتح اپنے نام کرلی۔

تفصیلات کے مطابق دبئی انٹرنیشنل اسٹیڈیم میں پی ایس ایل کا 23واں میچ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز اور پشاور زلمی کے مابین کھیلا گیا، گلیڈی ایٹرز کی کپتانی سرفراز احمد جبکہ زلمی کی قیادت ڈیرن سیمی نے کی۔

گلیڈی ایٹرز کی دعوت پر پشاور زلمی نے بیٹنگ کا آغاز کیا تو محمد حفیظ اور کامران اکمل میدان میں آئے، سیمی الیون کی پہلی وکٹ 5 رنز پر گری تاہم نئے آنے والے بیٹسمین محمد حفیظ نے ڈیوائن اسمتھ کے ساتھ ذمہ دارانہ بیٹنگ کی تاہم 61 کے مجموعی اسکور پر زلمی کو دوسرے نقصان کا سامنا کرنا پڑا، مقررہ اوورز کے اختتام پر سیمی کی شاندار بیٹنگ کی بدولت زلمی نے گلیڈی ایٹرز کو جیت کے لیے 157 رنز کا ہدف دیا۔

وکٹیں گرنے کی ترتیب 

سیمی الیون کی پہلی وکٹ 5 دوسری 61، تیسری 89 ، چوتھی 95 اور پانچویں 101 پر گری بعد ازاں کپتان سیمی نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور ٹیم کو مجموعی اسکور 157 تک پہنچایا، زلمی کے کپتان 36 رنز کے ساتھ نمایاں بلے باز رہے جبکہ گلیڈی ایٹرز کے باؤلر شین واٹس 2 کھلاڑیوں کو آؤٹ کر کے باؤلرز کی فہرست میں اول نمبر پر رہے۔

ہدف کے تعاقب میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی جانب سے اوپننگ کے لیے اسد شفیق اور شین واٹسن میدان میں اترے، سرفراز الیون کی پہلی وکٹ 30 کے مجموعی اسکور پر گری بعد ازاں 54 رنز پر ٹیم کو دوسرے نقصان کا سامنا کرنا پڑا، گلیڈی ایٹرز کی تیسری وکٹ 69 اور چوتھی 84 پر گری۔

کپتان سرفراز احمد نے 45 اور ریلی روسو نے 30 رنز کی ذمہ دارانہ ناقابل شکست اننگز کھیلی اور ٹیم کو فتح سے ہمکنار کرواتے ہوئے پوائنٹس ٹیبل پر پہلی پوزیشن دلوائی۔

سرفراز احمد کو شاندار کارکردگی دکھانے پر مین آف دی میچ کا ایوارڈ دیا گیا۔


گلیڈی ایٹرز اننگز خلاصہ

کپتان سرفراز احمد اور رلی روسو نے 84 رنز پر کریز سنبھالی اور 74 رنز کی شاندار شراکت داری کے بعد ٹیم کو 6 وکٹوں سے فتح دلوائی، گلیڈی ایٹرز نے آخری اوور میں زلمی کو شکست دی۔

گیارہویں اوور میں پشاور زلمی کے رمیز راجہ آؤٹ ہوئے، پندرہویں اوور کے اختتام پر ٹیم کا مجموعی اسکور چار وکٹوں کے نقصان پر 117 تک پہنچا۔

آٹھویں اور نویں اوور میں زلمی کے مزید دو کھلاڑی آؤٹ ہوئے تاہم بلے بازوں نے جارحانہ کھیل کا مظاہرہ بھی کیا، دسویں اوور کے اختتام پر ٹیم کا مجموعی اسکور تین وکٹوں کے نقصان پر 81 تک پہنچا۔

ہدف کے تعاقب میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی جانب سے اوپننگ کے لیے اسد شفیق اور شین واٹسن میدان میں اترے، پانچویں اوور کی پہلی گیند پر حسن علی نے اسد شفیق کو پویلین کی راہ دکھائی، اوور مکمل ہونے پر ٹیم کا مجموعی اسکور ایک وکٹ نقصان 36 تک پہنچا۔

پشاور زلمی اننگز خلاصہ

ڈیرن سیمی نے وکٹ سنبھالی اور 2 چھکوں چار چوکوں کی مدد سے 36 رنز کی شاندار اننگز کھیلی علاوہ ازیں رکی ویسلز بھی اچھے بلے باز ثابت ہوئے، مقررہ 20ویں اوور کے اختتام پر زلمی نے 5 وکٹوں کے نقصان پر 157 رنز بنائے۔

بارہویں اوور میں ایک جبکہ 14ویں میں پشاور زلمی کی دو وکٹیں گریں، پندرہ اوور مکمل ہونے پر پشاور زلمی کا مجموعی اسکور 5 وکٹوں کے نقصان پر 101 تک پہنچا۔

نویں اوور کی دوسری بال پر زلمی ڈیوائن اسمتھ 61 کے مجموعی اسکور پر پویلین لوٹے انہوں نے 49 رنز کی اننگز کھیلی، دسویں اوور کے اختتام پر سیمی الیون کا مجموعی اسکور 2 وکٹوں کے نقصان پر 74 تک پہنچا۔

پشاور زلمی کی جانب سے اننگز کا آغاز محمد حفیظ اور کامران اکمل نے کیا، محمد نواز نے پہلے ہی اوور میں اکمل کو بغیر کھاتہ کھولے پویلین کی راہ دکھائی، پانچ اوورز کے اختتام پر زلمی نے ایک وکٹ کے نقصان پر 33 رنز اسکور کیے۔

سرفراز احمد نے ٹاس جیت پر مخالف ٹیم کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی، اُن کا کہنا تھا کہ پچ کر گھانس موجود ہے اس لیے مخالف ٹیم کو کم سے کم رنز پر آؤٹ کرنے کی کوشش کریں گے۔

گلیڈی ایٹرز نے پلئینگ الیون میں کوئی تبدیلی نہیں کی جبکہ پشاور زلمی میں فلیچر کی جگہ ویسلز اور ابتسام کی جگہ محمد اصغر کو اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں