The news is by your side.

Advertisement

کوئٹہ اسپنی روڈ پر پولیس موبائل کے قریب دھماکہ، دواہلکارجاں بحق

کوئٹہ : بلوچستان ایک بارپھر دہشت گردی کا نشانہ بن گیا، کوئٹہ اسپنی روڈ پر پولیس کی موبائل کے قریب دھماکے میں دو پولیس اہلکارجاں بحق اور ایک بچے سمیت آٹھ افراد زخمی ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق دہشت گردوں نے کوئٹہ پر ایک اور وار کرتے ہوئے اسپنی روڈ پر پولیس موبائل کو اپنی کارروائی کا نشانہ بنایا۔ دھماکے سے چھ پولیس اہلکاروں سمیت نو افراد زخمی ہوگئے۔

اسپنی روڈ پر اڈے کے قریب رات آٹھ بجے کے قریب دھماکہ اس وقت ہوا جب صدر تھانے کی پولیس موبائل اور موٹرسائیکل سوار پٹرولنگ ٹیم وہاں سے گزر رہی تھی کہ پرانے اڈے کی قریب سڑک کنارے بم کا زو ر دار دھماکہ ہوا، دھماکے کی زد میں گاڑی اور موٹر سائیکل پر سوار چھ پولیس اہلکاراور ایک بچہ سمیت چار راہ گیر زخمی ہوگئے،


Loud blast rocks Quetta by arynews

زخمیوں کو فوری طور پر قریبی اسپتال منتقل کیا گیا، جہاں شدید زخمی کانسٹیبل عبداللہ اورکانسٹیبل ارشد علی زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگئے۔

دھماکے کی اطلاع ملتے ہی پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے جائے وقوعہ کو اپنے گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردیا۔ اس موقع پر بم ڈسپوزل اسکوڈ کو بھی طلب کرلیا گیا۔

صوبائی وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی نے دھماکے کی جگہ کا دورہ کیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ اس طرح کے حملوں سے دہشت گرد مورال کم نہیں کر سکتے۔

صوبائی وزیر داخلہ سرفراز بگٹی نے بتایا کہ دھماکا ریموٹ کنٹرول ڈیوائس کے ذریعے کیا گیا جس سے آٹھ افراد زخمی ہوئے۔

پولیس کے مطابق دھماکا خیز مواد سڑک کے کنارے نصب کیا گیا تھا، جس کا ہدف پولیس کی موبائل تھی۔

اسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ دھماکے کے بعد نو زخمیوں کو اسپتال لایا گیا جس میں سے دو پولیس اہلکار زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے، پانچ شدید زخمیوں کو سی ایم ایچ منتقل کردیاگیا جہاں ایک کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔

ابتدائی رپورٹ کے مطابق بم ریموٹ کنٹرول ڈیوائس کے ذریعے کیا گیا جس میں دو سے ڈھائی کلو بارودی مواد استعمال ہوا۔

رواں ماہ اس سے قبل سریاب روڈ پر چیک پوسٹ اور مشرقی بائی پاس پرپولیس کی ٹیموں کو دوبار نشانہ بنایا گیا، یاد رہے کہ یہ کوئٹہ میں رواں ماہ پولیس پر چوتھا حملہ ہے۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں