کوئٹہ میں عیسائیوں کی عبادت گاہ پرحملےکامقدمہ درج Quetta church attack
The news is by your side.

Advertisement

کوئٹہ میں عیسائیوں کی عبادت گاہ پرحملے کا مقدمہ درج

کوئٹہ: عیسائیوں کی عبادت گاہ پر حملے کامقدمہ درج کرلیا گیا جبکہ چرچ چوکیدارکی حاضر دماغی ن ےبڑے سانحےسے بچالیا، دہشت گردوں کو دیکھ کر چوکیدار نے گیٹ بندکردیا تھا، سی سی ٹی وی فوٹیج منظرعام پرآگئی۔

تفصیلات کے مطابق کوئٹہ میں گرجا گھر پر حملے کا مقدمہ درج کرلیا گیا، دہشتگردی کی ایف آئی آرایس ایچ او کی مدعیت میں تھانہ سول لائن میں نامعلوم دہشتگردوں کیخلاف درج کرلی گئی۔

 مقدمے میں قتل، اقدام قتل، ایکسپلوزیوایکٹ، انسداد دہشتگردی سمیت دیگر دفعات شامل کی گئیں ہیں۔

دوسری جانب تفتیش کاروں نے دوسرے روز بھی چرچ کے احاطے سے شواہد اکھٹے کئے، خوکش حملہ آوروں کی شناخت کیلئے نادرا سے بھی مدد طلب کرلی گئی ہے۔

چرچ چوکیدار کی حاضر دماغی نے بڑے سانحے سے بچالیا، خودکش بمباروں کو دیکھ کر نہتے چوکیدار نے گیٹ بند کر دیا تھا ، دہشتگرد اندرگھسنے کی کوشش کرتے رہے۔

ایک دہشتگرد دروازے پر چڑھا اور اندر کی طرف اندھا دھند فائرنگ کی اور دروازہ کھولا تو دوسرا دہشت گرد بھی اندر داخل ہوگیا، پولیس کی فائرنگ سے ایک دہشتگردزخمی ہوگیا جبکہ دوسرا دروازہ تک محدود رہا۔

پولیس اور سیکیورٹی فورسز کے ایکشن میں دونوں حملہ آور مارے گئے تھے جبکہ چرچ پر دہشت گردوں کے حملے کے سی سی ٹی وی فوٹیج منظرعام پر آئی تھی، جس میں دہشت گردوں کے چہرے اور ان کا حلیہ صاف دکھائی دے رہا ہے۔

فوٹیج میں واضح طور پر دیکھا جاسکتا ہے کہ ایک حملہ آور نے سردی کے موسم کا فائدہ اٹھاتے ہوئے شال میں کلاشنکوف چھپا رکھی تھی، شال اوڑھے اس حملہ آور نے کلاشنکوف نکال کر چرچ میں داخل ہونے کی کوشش کی۔


مزید پڑھیں : کوئٹہ چرچ حملہ: 9 افراد جاں بحق‘ 35 زخمی


یاد رہے کہ گذشتہ روز  کوئٹہ کے علاقے زرغون روڈ پرواقع چرچ پر دہشت گردوں کے حملے کے نتیجے میں 3خواتین سمیت 9 افراد جاں بحق جبکہ 35 افراد زخمی ہوگئے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں