The news is by your side.

Advertisement

کوئٹہ: آن لائن داخلہ ٹیسٹ کے خلاف میڈیکل طلبہ کا احتجاج، مسلح گارڈز کی فائرنگ

کوئٹہ: آن لائن داخلہ ٹیسٹ کے خلاف میڈیکل طلبہ نے پریس کلب پر احتجاج کیا، ریڈ زون کی طرف جاتے ہوئے ٹی این ٹی چوک پر مسلح گارڈز کے ساتھ تصادم ہوا، گارڈز نے ہوائی فائرنگ بھی کی۔

تفصیلات کے مطابق کوئٹہ میں پریس کلب پر احتجاج کے بعد آن لائن داخلہ ٹیسٹ کے خلاف نکلنے والے طلبہ نے ریڈ زون کی طرف مارچ کیا۔

احتجاجی طلبہ ریڈ زون کے قریب ٹی این ٹی چوک پہنچے، تو چوک پر گاڑیاں روکے جانے پر مسلح گارڈز کا احتجاجی طلبہ سے جھگڑا ہوا، مسلح گارڈز ہوائی فائرنگ کر کے چلے گئے، تاہم اس غیر قانونی حرکت پر پولیس دیکھتی رہ گئی۔

احتجاجی طلبہ نے وزیر اعلیٰ اور گورنر ہاؤسز کے قریب چوک پر دھرنا دیا، طلبہ میڈیکل کے آن لائن داخلہ ٹیسٹ کی منسوخی کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے میڈیکل انٹری ٹیسٹ میں بے ضابطگیوں کے خلاف طلبہ احتجاج کے دوران پولیس نے طلبہ پر بے رحمانہ تشدد کیا تھا، پولیس شیلنگ سے ایک طالبہ ہانی بلوچ انتقال کر گئی تھیں۔

دوسری طرف ترجمان بلوچستان حکومت لیاقت شاہوانی نے بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے شکایات سے متعلق پاکستان میڈیکل کمیشن کو 2 مراسلے بھجوائے جا چکے ہیں۔

لیاقت شاہوانی نے کہا کہ بلوچستان حکومت اسٹوڈنٹس کے جائز مطالبات کی حمایت کرتی ہے، صرف کوئٹہ نہیں اس وقت طلبہ کی شکایات پورے ملک میں رپورٹ کیے گئے ہیں، اسلام آباد میں 10 روز سے اسٹوڈنٹس احتجاج کر رہے ہیں۔

ترجمان بلوچستان حکومت کا کہنا تھا کہ کوئٹہ میں آج پھر میڈیکل اسٹوڈنٹس نے احتجاج شروع کر دیا ہے، پی ایم سی اسٹوڈنٹس کے جائز مطالبات کے حل کے لیے اقدامات کرے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں