site
stats
پاکستان

بلوچستان میں سیاسی بحران، مزید دو اراکین اسمبلی مستعفی

quetta

کوئٹہ : بلوچستان میں سیاسی ہلچل میں شدت آگئی، صوبائی وزیر سمیت مزید دو اراکین اسمبلی رکنیت سے مستعفی ہوگئے، وزیر لیبرراحت جمالی، مشیر ایکسائز ماجد ابڑو نے استعفیٰ دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق بلوچستان میں نواز لیگی حکومت کی کشتی ہچکولے کھانے لگی، ایک ایک کرکے سب پارٹی کا ساتھ چھوڑنے لگے۔

وزیر اعلیٰ ثناءاللہ زہری کیخلاف تحریک عدم اعتماد کے بعد کابینہ کےمزید دو ارکان اسمبلی مستعفی ہوگئے، وزیر لیبر راحت جمالی اور محض دو دن قبل ہی مشیر ایکسائز کا عہدہ سنبھالنے والے ماجد ابڑو نے ناراض گروپ کی حمایت کرتے ہوئے استعفیٰ دے دیا۔

دوسری جانب ڈیرہ بگٹی اور سوئی میں صوبائی وزیر داخلہ سرفرازبگٹی کی حمایت میں ریلی بھی نکالی گئی ہے۔

علاوہ ازیں وزیراعلیٰ بلوچستان نواب ثناءاللہ زہری سے صوبائی وزیر نواب محمد خان شاہوانی نے ملاقات کی اور موجودہ سیاسی صورتحال پر گفتگو کی۔

بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے نواب محمدخان نے کہا کہ وزیراعلیٰ کیخلاف تحریک عدم اعتماد کامیاب نہیں ہونےدیں گے۔


مزید پڑھیں: وزیراعلیٰ بلوچستان کیخلاف تحریک عدم اعتماد پیش، سرفرازبگٹی کا مستعفی ہونیکا فیصلہ


واضح رہے کہ دو جنوری کو حکومتی اتحاد میں شامل جماعتوں اور اپوزیشن اراکین بلوچستان اسمبلی نے وزیراعلیٰ ثناءاللہ زہری کے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع کرائی تھی۔

اراکین کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ بلوچستان اپنوں کو نوازتے ہیں اور باقی منہ دیکھتے رہ جاتے ہیں لیکن اب اور نہیں چلے گا۔

بلوچستان کے 65 رکنی ایوان میں مسلم لیگ ق کی 5، پشتونخواء میپ کی چودہ، نیشنل پارٹی کی 10اور مسلم لیگ نون کی 23 نشتیں ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top