The news is by your side.

Advertisement

سابق صدر پاکستان رفیق تارڑ انتقال کر گئے

لاہور: سابق صدر پاکستان رفیق تارڑ رضائے الہی سے انتقال کرگئے، وہ کافی عرصے سے علیل تھے۔

پاکستان کے سابق صدر محمد رفیق تارڑ علالت کے بعد 92 برس کی عمر میں انتقال کر گئے۔

ان کی پیدائش منڈی بہاؤالدین میں ہوئی تھی، انہوں نے 1951 میں پنجاب لاء کالج سے ایل ایل بی کی ڈگری حاصل کی، رفیق تارڑ 17 جنوری 1991 سے یکم نومبر 1994 تک سپریم کورٹ کے جج بھی رہے۔

مرحوم کا شمار نواز شریف کے اہم ساتھیوں میں ہوتا تھا،  ان کی بہو سائرہ افضل تارڑ اور پوتا عطا تارڑ نون لیگ کے اہم رہنما ہیں، عطااللہ تارڑ نے ٹوئٹر پر دادا کی وفات کی تصدیق کی ہے۔

اہل خانہ کی جانب سے مرحوم کی نمازہ جنازہ کا اعلان کردیا گیا ہے، سابق صدر محمد رفیق تارڑ کی نماز جنازہ آج بعد نماز عصرجامعہ اشرفیہ میں ادا کی جائےگی۔

سیاسی سفر

محمد رفیق تارڑ انیس سو ستانوے میں سپریم کورٹ کے جج کے طور پر ریٹائر ہونے کے بعد پاکستان مسلم لیگ نواز کے ٹکٹ پر سینیٹ کے رکن منتخب ہوئے اور پھر اسی سال ملک کے صدر بنے۔

ان کے دور میں صدر کے اختیارات کو بتدریج کم کیا گیا اور بالآخر تیرھویں ترمیم کے ذریعے صدر کے اختیارات میں آئین کی روح کے مطابق مکمل طور پر کمی کردی گئی۔

انیس سو ننانوے میں جنرل پرویز مشرف کی طرف سے میاں نواز شریف کی حکومت کی برطرفی کے بعد انہیں عہدے سے نہیں ہٹایا گیا اور وہ سن دوہزار ایک تک صدر رہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے بھی سابق صدر محمد رفیق تارڑ کےانتقال پر اظہار تعزیت کیا ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری ٹوئٹ میں آرمی چیف نے دعا کی کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کو جوار رحمت میں جگہ عطا فرمائے اور مرحوم کےاہل خانہ کو یہ صدمہ برداشت کرنےکی ہمت عطا فرمائے۔

شہباز شریف کا اظہار افسوس

صدر مسلم لیگ (ن) شہباز شریف نے سابق صدر پاکستان کے انتقال پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے شفیق اور زیرک قانون دان رفیق تارڑ بھی رخصت ہوگئے، اللہ سابق صدر پاکستان رفیق تارڑ کے درجات بلند فرمائے۔

شہباز شریف نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا کہ رفیق تارڑ ہمارے لئے ایک قابل احترام بزرگ کا درجہ رکھتے تھے انہوں نے مخلصانہ رہنمائی اور معاملہ فہمی میں کلیدی کردار اد ا کیا، رفیق تارڑ کی وفات ایک ذاتی صدمہ ہے، رفیق تارڑ کی کمی ہمیشہ ہر قدم پر محسوس ہوتی رہے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں