The news is by your side.

Advertisement

ہم جانتے ہیں پیگاسس ویئر کے ذریعے وہ کیا پڑھ رہے ہیں؟ راہول گاندھی

نئی دہلی: کانگریس رہنما راہول گاندھی نے وزیر اعظم نریندر مودی پر طنز کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم جانتے ہیں پیگاسس ویئر کے ذریعے وہ کیا پڑھ رہے ہیں؟

تفصیلات کے مطابق کانگریس لیڈر راہول گاندھی نے اسرائیلی سافٹ ویئر پیگاسس کے ذریعے اپوزیشن لیڈرز، میڈیا اہل کاروں اور دیگر اہم افراد کے فون کی جاسوسی کے معاملے پر ایک طنزیہ ٹوئٹ کیا ہے.

پیگاسس پروجیکٹ کے حوالے سے راہول گاندھی نے اپنے 16 جولائی کے ٹوئٹ کو ری ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا کہ ’ہم جانتے ہیں کہ وہ کیا پڑھ رہے ہیں، آپ کے فون پر موجود ہر چیز۔‘

فون کو آسانی سے ہیک کرنے والا پیگاسس کیا ہے؟

اس سے قبل سولہ جولائی کو راہول گاندھی نے ٹوئٹ کیا تھا کہ میں حیران ہوں کہ تم لوگ ان دنوں آخر کیا پڑھ رہے ہو۔

واضح رہے کہ ’دی وائر‘ نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا تھا کہ ملک کے کم از کم 40 صحافیوں کے فون نمبر لیک ہونے والی فہرست میں پائے گئے ہیں اور فورنسک جانچ سے جن کی تصدیق ہوئی ہے کہ یا تو ان نمبروں کی جاسوسی ہوئی یا انھیں ٹارگٹ کیا گیا، اور اس کے لیے اسرائیلی ہیکنگ سافٹ ویئر پیگاسس کا استعمال کیا گیا۔

اسرائیلی ہیکنگ سافٹ ویئر عمران خان کےخلاف بھی استعمال ہونے کا انکشاف

ادھر اسرائیلی ہیکنگ کا معاملہ دوسرا وکی لیکس بن گیا ہے، جہاں ہوش ربا انکشافات کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ شروع ہوگیا ہے، واشنگٹن پوسٹ کی جانب سے جاری رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ اسرائیلی ہیکنگ سافٹ ویئر نواز شریف کی حکومت میں عمران خان کے خلاف بھی استعمال ہوا، ذرائع کا کہنا ہے کہ ریکارڈ کے مطابق مختلف نمبرز میں ایک نمبر عمران خان کے زیر استعمال تھا، اس کے علاوہ نواز حکومت میں یہی سافٹ ویئر حساس اداروں اور سیاست دانوں کے خلاف بھی استعمال ہوا۔

دوسری جانب اسرائیلی سوفٹ ویئر سے بھارتی اپوزیشن لیڈرز کی جاسوسی پر انڈیا میں کھبلی مچ گئی ہے اور مودی سرکار کو شدید تنقید کا سامنا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں