The news is by your side.

’سیلاب سے ریلوے کا 500 ارب روپے سے زائد کا نقصان ہوا ہے‘

محکمہ ریلوے کے چیف ایگزیکٹو افسر فرخ تیمور نے کہا ہے کہ حالیہ سیلاب سے ریلوے کو 500 ارب روپے سے زائد کا نقصان ہوا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق قومی اسمبلی کی سب کمیٹی برائے ریلوے کا اجلاس ہوا جس میں سی ای او فرخ حبیب نے ریلوے سے سیلابی صورتحال پر کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ سیلاب کے باعث ریلوے کا شدید نقصان ہوا ہے اور نقصانات کا تخمینہ 500 ارب روپے سے اوپر جا رہا ہے، سیلاب زدہ علاقوں میں دیکھ کر ایسا لگتا ہے ریلوے لائن سمندر میں موجود ہے۔

سی ای او ریلوے نے کہا کہ ایسا نہیں ہے کہ ریلوے کا سارا سسٹم روک دیا گیا ہے تاہم ٹرینیں نہ چلنے سے 7 ارب روپے کا نقصان ہوچکا ہے اور ہمارے پاس اب تنخواہ دینے کے پیسے بھی نہیں ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سیلاب زدہ علاقوں میں صورتحال اتنی خطرناک تھی کہ ایسا بھی ہوا کہ کسی جگہ کام کر رہے تھے تو وہاں سیلابی ریلا آگیا، کوشش کی ریلوے کا جو ڈھانچہ ہے اس پر آپریشن جاری رکھیں، افغانستان سے آنیوالے کوئلے کی ترسیل کیلئے پشاور ڈویژن نے کام کیا۔

اس موقع پر کنوینر کمیٹی حامد حمید نے کہا کہ ریلوے اور ہوا بازی کا ٹریک ایک نہیں ہے لیکن وزیر ایک ہے، انہوں نے سوالات اٹھائے کہ کیا کہ اگر مستقبل میں بھی کوئی آفت آتی ہے تو ریلوے کی کیا حکمت عملی ہوگی؟ حکومت مدد نہیں کرتی تو ریلوے کے پاس کوئی اور راستہ ہے؟ کیا ریلوے کسی عالمی مالیاتی ادارے یا ملک سے رابطہ کر سکتا ہے؟

Comments

یہ بھی پڑھیں