site
stats
سندھ

کراچی: بارشوں سے 7 افراد جاں‌ بحق، 90 فیصد بازار بند

کراچی: شہر قائد میں بارش کے دوران کرنٹ لگنے، چھت گرنے اور حادثات میں 7 افراد جاں بحق ہوگئے، سڑکوں پر پانی بھرنے سے نوے فیصد بازار بند رہے، تاجروں نے واٹر بورڈ کے خلاف احتجاج کا اعلان کردیا۔

امدادی ادارے کے ذرائع کے مطابق ایف سی ایریا بلاک3 میں کرنٹ لگنے سے ایک شخص جاں بحق ہوا، کشمیر روڈ پر موٹر سائیکل سلپ ہونے سے ایک شخص جاں بحق ہوگیا۔

اسی طرح کورنگی میں بجلی کا تار گرنے سے ایک شخص جاں بحق اور 5 زخمی ہوگئے،بفرزون میں کرنٹ لگنے سے ایک شخص جاں بحق ہوا، کلفٹن میں گھر کی چھت گرنے سے 4 افراد زخمی ہوگئے، اردو بازار کے قریب حادثے میں دو افراد جاں بحق ہوئے۔

ذرائع نے بتایا کہ ریلوے سٹی کالونی میں کرنٹ لگنے سے8 سال کابچہ جاں بحق ہوا،کورنگی پی اینڈ ٹی کالونی میں گھر کی چھت گرنے سے7 افراد زخمی ہوئے۔

دوسری طرف کراچی میں بارش کے باعث 90 فیصد تجارتی مراکز بند پڑے ہیں، سڑکوں پر پانی جمع ہونے پر تاجروں نے احتجاج کا اعلان کردیا۔

اطلاعات کے مطابق بارش کے باعث کھجور بازار، اردو بازار، لائٹ ہاؤس، میڈیسن مارکیٹ، لنڈا بازار،لیاری،چپل بازار، جھٹ پٹ مارکیٹ،جونا مارکیٹ بند ہیں۔

اولڈ سٹی ایریاز کی مارکیٹوں میں پانی جمع ہونے سے دکانوں میں بھی داخل ہوگیا جس پر سامان خراب ہونے سے تاجروں کو مالی نقصان اٹھانا پڑا۔

 

دکانوں میں پانی بھرنے کے خلاف کراچی تاجر اتحاد نے آئندہ ہفتے واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کے خلاف احتجاج کرنے کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ نکاسی آب کے ادارے ذمے داریوں کی ادائیگی میں ناکام ہیں۔

کراچی کا موسم انتہائی سرد ہوگیا، کل بھی بارش جاری رہنے کی پیش گوئی

کراچی میں دوسرے روز بھی بارش جاری رہی، ہوا چلنے اور بارش کے سبب کراچی میں موسم انتہائی سرد ہوگیا، گرم مشروبات اور گرم کپڑوں کی مانگ میں انتہائی اضافہ ہوگیا، بازار بند ہونے کے سبب شہریوں نے علاقوں میں لگے ٹھیلوں سے گرم کپڑے خریدے۔ محکمہ موسمیات نے تیسرے روز بھی بارش جاری رہنے کی پیش گوئی کردی۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top