ذرا سی بارش: کراچی میں بجلی غائب، سڑکوں‌ پر پانی، ٹریفک جام ARYNews.tv
The news is by your side.

Advertisement

ذرا سی بارش: کراچی میں بجلی غائب، سڑکوں‌ پر پانی، ٹریفک جام

کراچی میں بارش سے کے الیکٹرک کے 260 فیڈر ٹرپ کرگئے جس کے سبب شہر کا بیشتر حصہ تاریکی میں ڈوب گیا جبکہ ذرا سی بارش نے نکاسی آب کا بھی پول کھول دیا، سڑکوں پر پانی جمع ہونے سے جگہ جگہ ٹریفک جام ہوگیا، محکمہ موسمیات نے کراچی میں مزید بارش اور سردی کی پیش گوئی کردی۔ 

اطلاعات کے مطابق شہر میں ہلکی بارش ہوتے ہی 260 سے زائد فیڈر ٹرپ کرگئے اورکہیں کہیں بارش کے باعث مختلف علاقوں میں بجلی کے تار ٹوٹ گئے جس کے باعث گلشن اقبال،ابوالحسن اصفہانی روڈ، گلستان جوہر، گارڈن ، بلدیہ، شاہ لطیف ٹائون، کورنگی، سائٹ ایریا، اورنگی، لانڈھی، نارتھ ناظم آباد میں بھی بجلی بند ہوگئی۔

ٹریفک جام سے ہزاروں گاڑیاں پھنس گئیں

دوسری جانب کراچی کے مختلف شہروں میں ٹریفک جام کے سبب شہری رل گئے، شارع فیصل پر ٹریفک جام کے سبب ہزاروں گاڑیاں پھنس گئیں۔

وقفے وقفے سے جاری ہلکی بارش نے نکاسی آب کا پول کھول کر رکھ دیا، شہر کی مختلف سڑکوں پر بارش کا پانی جمع ہوگیا۔

نمائندہ اےآر وائی نیوز سلمان لودھی کے مطابق صدر، ایم اے جناح روڈ، کھارادر میٹھادر اور دیگر اولڈ سٹی ایریا کی سڑکوں پر بارش کا پانی جمع ہونے سے گاڑیوں کا گزرنا مشکل ہوگیا جس کی وجہ سے جگہ جگہ ٹریفک جام ہے۔

محکمہ موسمیات کی مزید بارش اور سردی کی پیش گوئی

اس حوالے سے چیف میٹرولوجسٹ نے کہا ہے کہ کراچی میں سب سے زیادہ بارش مسرور ایئربیس پر 6ملی میٹر ریکارڈ کی گئی، اسی طرح نارتھ کراچی میں چار، ناظم آباد میں تین، کراچی ایئرپورٹ پر ایک، یونیورسٹی روڈ پر 2.2ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

انہوں نے مزید بتایا کہ کراچی میں آئندہ 24 گھنٹے میں وقفے وقفے سے بارش جاری رہے گی۔

سردی کے حوالے سے محکمہ موسمیات نے کہا ہے کہ کراچی میں درجہ حرارت گیارہ ڈگری سینٹی گریڈ تک گرسکتا ہے، کوئٹہ میں منفی چار، اسلام آباد میں درجہ حرارت منفی ایک، لاہور میں دو سینٹی گریڈ تک ہوسکتا ہے۔


دریں اثنا پہلی بارش ہوتے ہی شہریوں نے پکوڑے اور دیگر اشیا کھانے کو ترجیح‌ دی، بازار میں‌ پکوڑے، نمکو، سموسے اور دیگر کھانے پینے کی اشیا کی دکانوں پر لوگوں‌ کا رش لگ گیا۔


بارش ہوتے ہی کچھ لوگوں‌ نے فورا ہی ساحل کا رخ کیا اور وہاں‌ سردی کے باوجود موسم سے لطف اندوز ہوئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں