The news is by your side.

Advertisement

فلم سنجو سمیت دیگر کامیاب فلمیں‌ بنانے والے راج کمار ہیرانی پر ساتھی خاتون کو ہراساں کرنے کا الزام

راج کمار ہیرانی نے الزامات مسترد کردیے

ممبئی: بالی ووڈ کے نامور ہدایت کار راج کمار ہیرانی پر اُن کی ساتھی نے ہراساں کرنے کا الزام عائد کردیا۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق فلم سنجو میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر کا کے طور پر امور سرانجام دینے والی خاتون نے کاسٹ کو بذریعہ ای میل مطلع کیا کہ انہیں ہیرانی نے ہراساں کیا۔

خاتون نے الزام عائد کیا کہ فلم کی شوٹنگ کے دوران ہیرانی نے نازیبا کلمات ادا کیے اور ان کے ساتھ کچھ عجیب برتاؤ بھی کیا۔

بالی ووڈ انڈسٹری میں جنسی ہراسانی (می ٹو مہم) کے خلاف گزشتہ برس اکتوبر سے آوازیں اٹھنا شروع ہوئیں تھیں جس کی زر میں اداکار اور ہدایت کار آئے تھے۔

اداکار نانا پاٹیکر، آلوک ناتھ اور موسیقار انو ملک سمیت بھارتی صحافیوں اور سیاستدانوں پر بھی خواتین نے جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزامات لگائے جبکہ بھارتی گلوکار میکا سنگھ کو ہراساں کرنے کے الزام میں دبئی میں ایک روز حراست میں بھی لیا گیا تھا۔

مزید پڑھیں: راج کمار ہیرانی کی ’’سنجو‘‘ کے سامنے باکس آف ریکارڈز پاش پاش ہوگئے

علاوہ ازیں بالی ووڈ فلم ساز ساجد خان، سبھاش گائے اور وکاس بہل پر بھی خواتین اداکاراؤں نے جنسی ہراسانی کے الزامات عائد کیے جس کی وجہ سے انڈسٹری میں ایک بھونچال بھی آیا۔

مسٹر پرفیکٹ نے می ٹو کی زد میں آنے والے افراد کے ساتھ کام نہ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے دیگر لوگوں کو بھی مشورہ دیا تھا کہ جب تک ملزم کلیئر نہیں ہوجاتا اس سے رابطہ منقطع کردیا جائے۔

بالی ووڈ ہدایت کار سبھاش گھائے پر الزامات لگانے والی خواتین نے عدالت میں مقدمہ لڑنے سے معذرت کی جبکہ ساجد خان کو فلم کے ڈائریکٹر کے عہدے سے سبکدوش بھی ہونا پڑا۔

قبل ازیں جن خواتین نے جنسی ہراساں کرنے کے واقعات کا تذکرہ کیا وہ پرانے تھے البتہ یہ پہلی بار ہے کہ فلم کی ریلیز کے چند ماہ بعد ہی کسی ڈائریکٹر پر الزام عائد کیا گیا۔

بھارتی میڈیا نے خاتون کی شناخت ظاہر نہ کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ انہوں نے جنسی ہراساں کرنے سے متعلق ٹیم کے دیگر ممبران کو نومبر 2018 میں ہی بذریعہ ای میل مطلع کردیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: سنجو نے عامر خان اور سلمان کی کامیاب فلموں کو پیچھے چھوڑ دیا

رپورٹ کے مطابق خاتون اسسٹنٹ ڈائریکٹر نے پروڈیوسر ونود چوپڑا اور اُن کی صحافی اہلیہ ، فلم ڈائریکٹر انوپم چوپڑا، سنجو کے اسکرپٹ رائٹر ابھیجیت جوچی اور اُن کی اہلیہ کو نومبر میں ہی ای میل کردی تھی۔

خاتون نے دعویٰ کیا کہ انہیں سنجو کی شوٹنگ کے دوران 2 مواقعوں پر راج کمار ہیرانی نے ہراساں کیا جس کی وجہ سے انہیں شدید صدمہ بھی پہنچا اور وہ کئی عرصے تک مایوس بھی رہیں۔

سنجو کے پروڈیوسر، اہلیہ، اسکرپٹ رائٹر اور انوپم چوپڑا نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کی جانب سے موصول ہونے والی ای میل کی تصدیق بھی کی البتہ کسی نے بھی اس معاملے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔

بالی ووڈ کی کامیاب فلمیں دینے والے ہدایت کار نے اپنے اوپر عائد ہونے والے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے انہیں اپنے خلاف سازش قرار دے دیا۔ ہیرانی نے مذکورہ خاتون کو ہتک عزت کا نوٹس بھی ارسال کیا۔

اسے بھی پڑھیں: جنسی ہراساں کرنے کا الزام، ساجد خان پر ایک سال کی پابندی

مزید پڑھیں: جنسی ہراساں کرنے والوں‌ کا بائیکاٹ‌ کیا جائے، عامر خان کا مشورہ

یاد رہے کہ راج کمار ہیرانی نے بالی ووڈ انڈسٹری میں 2003 سے بطور ڈائریکٹر کیریئر کا آغاز کیا اور انہوں نے پہلی فلم ’منّا بھائی ایم بی بی ایس‘ بنائی جس بہت زیادہ کامیاب رہی۔

بعد ازاں انہوں نے تھری ایڈیٹس، پی کے اور سنجو جیسی بلاک بسٹر فلموں میں بھی ہدایت کاری کی اور چند ہی کامیاب فلمیں بنا کر متعدد ایوارڈز وصول کیے، اُن کا شمار انڈسٹری کے کامیاب ترین ڈائریکٹرز میں ہوتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں