The news is by your side.

Advertisement

مودی کی ناقد بھارتی مسلمان صحافی کو بیرون ملک جانے سے روک دیا گیا

نئی دہلی: بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کی پالیسیوں کی سخت ناقد مسلمان بھارتی صحافی رعنا ایوب کو بیرون ملک جانے سے روک دیا گیا، رعنا جرنلسٹ فیسٹول میں بھارتی جمہوریت پر ایک تقریر کرنے جارہی تھیں۔

بھارتی صحافی اور وزیر اعظم نریندر موری کی ناقد رعنا ایوب کو جرنلسٹ فیسٹول میں شرکت کے لیے برطانیہ جانے سے روکنے پر سوشل میڈیا پر صارفین اور صحافتی تنظیمیں مودی حکومت پر تنقید کررہی ہیں اور مطالبہ کررہی ہیں کہ صحافی کے بیرون ملک سفر کرنے پر عائد پابندی کو ختم کیا جائے۔

رعنا ایوب نے 29 مارچ کو اپنی ایک ٹویٹ میں لکھا تھا کہ انہیں ممبئی کے ایئرپورٹ پر سفر کرنے سے روکا گیا، وہ جرنلسٹ فیسٹول میں بھارتی جمہوریت پر ایک تقریر کرنے جارہی تھیں۔

اس سے قبل انٹرنیشنل سینٹر فار جرنلسٹ نے ایک ٹویٹ میں لکھا تھا کہ وہ رعنا ایوب کو برطانیہ مدعو کر رہے ہیں اور وہ آن لائن تشدد پر ہونے والے ایک ایونٹ میں بات چیت کریں گی۔

رعنا ایوب کو بیرون ملک سفر سے روکنے کو ایمنسٹی انٹرنیشنل نے صحافی کے حقوق کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

اپنے بیان میں ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کہنا تھا کہ رعنا ایوب پر سفری پابندیاں بھارتی حکام کی جانب سے صحافیوں، سول سوسائٹی، انسانی حقوق کے کارکنان اور میڈیا اداروں کے حقوق کی خلاف ورزیوں کی فہرست میں تازہ اضافہ ہے۔

سفری پابندیوں کے خلاف رعنا ایوب نے دہلی ہائی کورٹ میں پٹیشن دائر کر رکھی ہے جس کی سماعت کل متوقع ہے۔

رعنا ایوب پر سفری پابندی کا حوالہ دیتے ہوئے اقوام متحدہ کے سابق مندوب ڈیوڈ کائے نے لکھا کہ میں کئی سالوں سے اقوام متحدہ کے لیے انسانی حقوق کی صورتحال کے مشاہدے کے لیے بھارت میں داخل ہونے کی کوشش کر رہا ہوں لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا۔، اب صحافی رعنا ایوب کو جانے سے روک دیا گیا ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کی صحافی میگھا موہن نے رعنا ایوب سے یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ صحافت جرم نہیں ہے۔

واضح رہے کہ صحافی رعنا ایوب گجرات فائلز کی مصنف ہیں جس میں انہوں نے سنہ 2002 میں گجرات میں ہونے والے فسادات کے حوالے سے اس وقت کی بی جے پی حکومت کو مورد الزام ٹھہرایا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں