site
stats
پاکستان

شروع سے ہی فوجی عدالتوں کا مخالف ہوں، رانا ثناء اللہ

لاہور : وزیر قانون پنجاب رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ کالعدم تنظیم کے کارکن کو الیکشن لڑنے کی اجازت حکومت نے نہیں الیکشن کمیشن اورعدلیہ نے دی ہے، فوجی عدالتیں مخصوص مدت کے لیے بنائی گئیں تھیں، اب اُن کی ضرورت نہیں رہی۔ میں شروع دن سے ہی فوجی عدالتوں کا مخالف رہا ہوں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہورمیں محکمہ تعلقات عامہ کے دفترمیں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا، اس موقع پران کے ہمراہ صوبائی وزیر انسداد دہشت گردی کرنل (ر) ایوب خان بھی موجود تھے۔

وزیر قانون پنجاب رانا ثناءاللہ کا کہنا تھا کہ کسی کالعدم تنظیم کے کارکن کو الیکشن لڑنے کی اجازت حکومت نے نہیں، الیکشن کمیشن اور عدلیہ نے دی ہے۔

اس حوالے سے صحافی کے سوال پر طیش میں آ کر صوبائی وزیر نے کہا کہ اس طرح کے سوال پوچھنا آپ کو زیب نہیں دیتا۔ جب ان سے کہا گیا کہ سوال آپ سے نہیں سی ٹی ڈی کے وزیر سے کیا گیا ہے تو ان کا کہنا تھا کہ نہیں اس سوال کا جواب وہی دینگے۔

پروفیسر سلمان حیدر کے اغواء کے حوالے سے انہوں نے بتایا کہ انہیں آئندہ 24 گھنٹوں میں بازیاب کروا لیا جائے گا۔

ملٹری کورٹس کے قیام کے حوالے سے رانا ثناءاللہ نے کہا کہ فوجی عدالتیں مخصوص مدت کے لیے بنائی گئیں تھیں، اب اُن کی ضرورت بھی نہیں رہی۔ ان کا کہنا تھا کہ میں اوّل دن سے ہی فوجی عدالتوں کے قیام کیخلاف ہوں۔

ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ دو سال سے فوجی عدالتوں کی جو کارکاردگی رہی ہے میں ان سے بھی مطمئن نہیں ہوں، انہوں نے کہا کہ انسداد دہشت گردی کی عدالتوں کو مزید مضبوط کریں گے۔

یاد رہے کہ حکومت نے فوجی عدالتوں کے قیام کی مدت میں توسیع کرنے کرنے کا فیصلہ کیا ہے ، مذکورہ عدالتوں کی دو سالہ مدت دو روز قبل ہی ختم ہوئی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top