لاہور دھماکے میں بارودی مواد کے استعمال کے شواہد نہیں ملے ہیں‘رانا ثنا اللہ -
The news is by your side.

Advertisement

لاہور دھماکے میں بارودی مواد کے استعمال کے شواہد نہیں ملے ہیں‘رانا ثنا اللہ

کراچی: وزیر قانون پنجاب رانا ثنا اللہ کا کہنا ہے کہ فرانزک رپورٹ کی ابتدائی تحقیقات بتاتی ہیں کہ دھماکے میں بارودی مواد کے استعمال کے شواہد نہیں ملے ہیں، اب تک تحقیقات کے نیتجے میں یہ انکشاف ہوا ہے کہ دھماکا غفلت کے سبب ہوا ہے.

تفصیلات کے مطابق وزیر قانون پنجاب رانا ثنا اللہ کا کہنا ہے کہ ڈیفنس دھماکےمیں7 افرادجاں بحق،35زخمی ہوئے ہیں، جس پر بہت افسوس ہے، فرانزک رپورٹ کو مدنظر رکھتے ہوئے یہ کہنا مناسب ہوگا کہ دھماکا بارودی مواد کا نہیں تھا، لہذا یہ کہنا بہتر ہوگا کہ گزشتہ روز ہونے والا دھماکا دہشت گردی نہیں تھا.

مزید پڑھیں:لاہور ڈیفنس میں دھماکہ‘ آٹھ جاں بحق 21 زخمی

ابتدائی تحقیقات میں عمارت سے گیس لیکیج اور سلنڈرکی موجودگی کے شواہد ملے ہیں، دھماکے میں بارودی مواد کے استعمال کے شواہد نہیں ملے ہیں، اب تک تحقیقات کے نیتجے میں یہ انکشاف ہوا ہے کہ دھماکا غفلت کے سبب ہوا ہے، اگر یہ بم دھماکا ہوتا تو زخمی ہونے والے افراد کی حا لت سے پتہ چل جاتا، البتہ فرانزک لیبارٹری سے معاملہ کلیئر ہونے تک دھماکے کا تعین نہیں ہوسکتا ہے.

رانا ثنا اللہ نے کہا کہ افواہوں کےباعث لاہورکےعوام میں خوف و ہراس پھیل گیا، ملک کے امن کے خاطر سب کو اپنی ذمے داری دکھانا ہوگی.

انہوں نے پرعزم ہوتے ہوئے کہا کہ ہر قیمت پر دہشت گردی کے خلاف جنگ کومنطقی انجام تک پہنچانا ہے، سب نے مل کر دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑنی ہے،قانون نافذ کرنے والے ادارے اپنی جانیں پیش کررہے ہیں، انہوں نے اور ریسکیو ٹیمیں فوراً موقع پرپہنچ کر اپنی ذمے داری کو احسن طریقے سے نبھایا ہے.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں