site
stats
پاکستان

را کے گرفتارایجنٹ سے متعلق مزید سنسنی خیز انکشافات

اسلام آباد : بھارتی خفیہ ایجنسی را کا ایجنٹ ایران کے راستے بلوچستان میں داخل ہوتا تھا،کلبھوشن یادیوبلوچستان اورکراچی کی علیحدگی کی سازش کررہا تھا۔ اسلام آبادمیں بھارتی ہائی کمشنر کوطلب کرکےتحریری جواب مانگ لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی خفیہ ایجنسی را کے ایجنٹ کو بلوچستان سے گرفتارکیا گیا۔ بھارتی نیوی کا حاضرسروس کمانڈرکلبھوشن یادیو حسین مبارک پٹیل کےجعلی نام سے پاکستان میں کارروائیاں کرتا تھا۔ پکڑے گئے جاسوس کا بھارتی پاسپورٹ نمبر ایل 9630722 ہے۔

ذرائع کے مطابق بھارتی جاسوس ایران کے راستے بلوچستان آتا تھا،اس کے پاسپورٹ پر ایران کا ویزہ تھااوروہ ایرانی شہرچاہ بہار میں تعینات تھا ۔

کلبھوشن یادیو بلوچستان اور کراچی میں کالعدم تنظیموں سے رابطے میں تھا, بلوچستان اور کراچی کی علیحدگی کے منصوبے پر کام کررہا تھا۔

کمانڈرسدرن کمانڈ نےبھی اس بات کی تصدیق کی کلبھوشن یادیو 16اپریل1970کوممبئی میں پیداہوا،والد کانام سدھیریادیوہے۔ پاسپورٹ پراس کی تاریخ پیدائش سولہ اپریل انیس سوستردرج ہے،وہ دوبچوں کا باپ ہے۔ بیوی اور دوبچے ممبئی میں اس کے والدین کے ساتھ رہتے ہیں۔

کلبھوشن یادیو نے 1987میں بھارت کی نیشنل ڈیفنس اکیڈمی پونا جوائن کی، یکم جنوری 1991میں انجینئرنگ برانچ میں کمیشن حاصل کیا 2001میں بھارتی نیول انٹیلی جنس میں شامل ہوا۔

2013سے ’’را‘‘کے لئے کام کررہاتھا،2022میں ریٹائرہونا تھا، ذرائع نےبتایا کہ دوران تفتیشی کلبھوشن یادیو نے بہت سی باتیں تسلیم کرلیں، اس نےبتایا کہ اسےپاک چین اقتصادی راہداری منصوبےکے خلاف کارروائیوں کاٹاسک دیا گیا تھا،تفتیشی اداروں نے ویڈیو بیان ریکارڈ کرلیا۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top