site
stats
پاکستان

ریگولیٹری اتھارٹیزکے ماتحت ہونے پر چیئرمین سینیٹ نے جواب طلب کرلیا

اسلام آباد : چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے کہا ہے کہ 5 ریگولیٹری باڈیز کو لائن حاضر کیا گیا ہے، ایوان کو بتایا جائے کہ کس قانون کے تحت ریگولیٹری اتھارٹیز کی خود مختاری ختم کی گئی؟

تفصیلات کے مطابق چیئرمین سینیٹ میان رضا ربانی نے حکومتی وزراء سے سوال کیا کہ کس قانون کے تحت نیپرا، پیپرا، اوگرا، سمیت 5 ریگولیٹری اتھارٹیز کو وزارتوں کےماتحت کیا گیا ہے ؟

انہوں نے مزید کہا کہ اس حوالے سے ایوان کو اعتماد میں لیا جائےاور بتایا جائے کہ سی سی آئی کو فیصلہ سازی کے وقت کیوں نظر انداز کیوں کیا گیا ہے؟

اس موقع پر وفاقی وزیر قانون زاہد حامد نے چیئرمین سینیٹ کے استفسار پر ایوان کو بتایا کہ ریگولیٹری باڈیز کو وزارتوں کے ماتحت کرنے کا اقدام غیر معمولی نہیں ہے اور نہ ہی پہلی مرتبہ ہوا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایسے اقدامات وفاقی حکومتیں پہلی بھی کرتی آئی ہیں اور اس سے قبل بھی کئی ادوار میں یہ ریگولیٹری اتھارٹیز متعلقہ وزارتوں کے ماتحت کام کرتی رہی ہیں۔

واضح رہے کہ وفاقی حکومت کی جانب سے دو روز قبل اوگرا، نیپرا، پیپرا، پی ٹی اے اور ایف اے بی کو متعلقہ وزارتوں کے ماتحت کرنے کا اعلامیہ جاری کیا تھا جس کے تحت یہ پانچوں ریگولیٹری اتھارٹی اب خود مختار ادارے نہیں رہے بلکہ متعلقہ وزارتوں کے ماتحت کام کریں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top