The news is by your side.

احتساب صرف سیاست دان کا نہیں، سول، ملٹری بیورو کریسی اور عدلیہ کا بھی ہونا چاہئے ،رضاربانی

کراچی : چیئرمین سینیٹ رضا ربانی کا کہنا ہے کہ احتساب صرف سیاست دان کا نہیں سول بیورو کریسی، ملٹری بیورو کریسی اور عدلیہ کا بھی ہونا چاہئے ، سینٹ الیکشن میں نواز لیگ کے آؤٹ ہونے سے سیاسی نظام کو دھچکا لگا ہے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے ایشیا امن فلم فیسٹول میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کراچی آئندہ انتخابات انشا اللہ وقت پر ہوں گے، جن سیاسی پارٹیوں کی سینیٹ میں نمائندگی ان کو نمائندگی کا حق ہے۔

رضا ربانی کا کہنا تھا کہ نیب کو از سر نو تشکیل کرنے کی ضرورت ہے، ملک کے اندر جب تک استحکام نہیں ہوگا انتہا پرست بڑھتے رہیں گے، تمام ادارے 1973 کے آئین تحت کام کریں گے تو جمہوریت مضبوط رہے گی۔

چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ نیب کے قانون کا ازسرنو جائزہ لینا چاہئے جبکہ آئینی اداروں کے درمیان محاذ آرائی سے مسائل بڑھیں گے، ملک اسوقت کسی قسم کی محاذ آرائی کا متحمل نہیں ہوسکتا۔


مزید پڑھیں : پاکستان کا پارلیمان آئین کے تحت کام کرنے کا پابند ہے: رضا ربانی


اس سے قبل ایشیاء امن فلم فیسٹول میں خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ افغانستان کے اندر عدم استحکام مسلم ممالک کا نہیں امریکہ نے پیدا کیا ہے، خلیج اور عرب ممالک میں تبدیلی کے نام پر امریکہ نے مداخلت کر رکھی ہے، امریکی سامراج نے مسلمُ ممالک میں جمہوری حکومتوں کو کمزور کرکے آمریتوں کی حمایت کی۔

رضا ربانی نے کہا کہ مغرب کو چاہیے کہ وہ مسلمُ دنیا کو ان اشوز کا ذمے دار نہ سمجھے، جس کا وہ خود ذمے دار ہے، بینظیر بھٹو نے انتہا پسندی کیخلاف جنگ لڑی ، بینظیر بھٹو نے ذوالفقار بھٹو کاراستہ چنا تھا، ذوالفقار بھٹو کے راستے پرچلنا آسان بات نہیں تھی، ذوالفقار بھٹو کے راستے پر چل کر بینظیر بھٹو نے اپنی شناخت بنائی۔

ان کا کہنا تھا کہ کراچی بینظیر بھٹو گرینڈ نیشنل فرنٹ بنانا چاہتی تھیں، وہ گرینڈ نیشنل فرنٹ جو آئین اور جمہوریت کو مضبوط کرے، سول، ملٹری بیورو کریسی نے انتہا پرستوں سے ملکر اپنے اقتدار کو طول دیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں