The news is by your side.

Advertisement

دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پارلیمان کو مضبوط بنایا جائے، رضا ربانی

اسلام آباد : چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پارلیمان کو مضبوط بنایا جائے ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات درست کرنے کے لیے خارجہ پالیسی پر نظرثانی کرنا ہوگی۔

چئیرمین سینیٹ رضا ربانی نے سول اسپتال کوئٹہ میں مولانا عبدالغفور حیدری پر خودکش حملے میں زخمی افراد کی عیادت کی اس موقع پر ان کے ہمراہ سابق وزیراعلٰی بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ اور سینیٹر کبیر محمد بھی موجود تھے۔


*مستونگ: ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے قافلے پر بم حملہ، 25 افراد جاں بحق


چئیرمین سینیٹ رضا ربانی کا کہنا تھا کہ ماضی کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے مستونگ اور گوادر سمیت دیگر دہشت گردی کے واقعات رونما ہورہے ہیں اور اس دہشت گردی کی روک تھام کے لیے سیاسی و عسکری قیادت سمیت سب کو اکٹھا ہونا ہوگا جس کے لیے آپریشن ضرب عضب کے بعد آپریشن ردالفساد کی کامیابی کے لیے ملک کے ایک ایک فرد کو ایک پیج پر آنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ ملک نازک دور سے گزر رہا ہے ایسے موقع پر ایک دوسرے پر الزام تراشیوں کے بجائے قومی یکجہتی کے مظاہرے کی ضرورت ہے کیوں کہ یہ ایک نظریاتی جنگ ہے جس کے لیے تمام پارلیمانی جماعتوں کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا اور قوم کی درست جانب رہنمائی کرنا ہوگی۔

چیئرمین سینٹ کا مزید کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر کے حل تک بھارت کے ساتھ تعلقات میں بہتری ممکن نہیں جب کہ ایران افغانستان سمیت ہمسایہ ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم ہونے چاہیں اس کے لیے ہمیں اپنی خارجہ پالیسی پر نظرثانی کرنا ہوگی اور پارلیمانی ڈپلومیسی کے ذریعے ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات بہتر بنایا جاسکتا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں