The news is by your side.

Advertisement

ڈیفنس میں پولیس مقابلہ اصلی یا جعلی، عباس کا دوبارہ پوسٹ مارٹم

کراچی: شہر قائد کے علاقے ڈیفنس فیز 4 میں مبینہ پولیس مقابلے میں ہلاک ملزم عباس کا دوبارہ پوسٹ مارٹم کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق تفتیشی حکام کا کہنا ہے کہ ڈاکٹروں کی ایک خصوصی ٹیم نے عباس کا دوبارہ پوسٹ مارٹم کیا ہے، ٹیم میں فارنزک کے 2 ماہر ڈاکٹر بھی شامل کیے گئے تھے۔

تفتیشی حکام کے مطابق مجسٹریٹ کی نگرانی میں عباس کا آج دوبارہ پوسٹ مارٹم کیا گیا، جس سے معلوم ہوگا کہ عباس کوگولیاں کتنے فاصلے سے لگیں۔

ڈیفنس پولیس مقابلہ: تفتیشی ٹیم نے اہم شواہد حاصل کرلیے

ری پوسٹ مارٹم سے ہلاکت کا اصل وقت معلوم ہو سکے گا، اور دیگر حقائق کا بھی علم ہو سکے گا۔

واضح رہے کہ یکم دسمبر کو اس کیس کے سلسلے میں تفتیشی حکام نے دعویٰ کیا تھا کہ 90 فی صد کام مکمل کر لیا گیا ہے، تحقیقات اہم موڑ پر آ گئی ہیں، پولیس نے ملزم عباس سے متعلق علی حسنین اور لیلیٰ پروین کو بھی باضابطہ شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کر لیا تھا۔

کراچی پولیس مقابلہ: تفتیش اہم موڑ پر، 90 فی صد کام مکمل، علی حسنین اور لیلیٰ پروین سے بھی تفتیش ہوگی

پولیس نے ٹیکنیکل ٹیم کی مدد سے روڈ میپ اور کالنگ ڈائی گرام بھی تیار کیا، تفتیشی حکام کا کہنا تھا کہ عباس کا 3 ماہ میں کس سے کتنی بار رابطہ رہا، اس کی پوری ہسٹری سامنے آ گئی ہے، ہلاک ملزم عباس نے علی حسنین کو 27 اور لیلیٰ پروین کو 33 فون کالز کیں۔

پولیس کا دعویٰ تھا کہ ملزم عباس کو مقابلے میں مارا گیا ہے، جب کہ علی حسنین اور لیلیٰ پروین نے کہا تھا کہ پولیس مقابلہ جعلی تھا، دونوں نے اپنے ڈرائیور عباس کا دوبارہ پوسٹ مارٹم کرنے کی درخواست بھی کی۔

یاد رہے کہ مبینہ پولیس مقابلہ 27 نومبر کی صبح گزری تھانے کی حدود میں ہوا تھا، جس میں پولیس نے مبینہ ملزم عباس اور 4 ساتھیوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں