The news is by your side.

Advertisement

رحمن بھولا گرفتار، ایف آئی اے کی ٹیم بنکاک روانہ

بنکاک : تھائی لینڈ میں روپوش بلدیہ فیکٹری کیس میں مطلوب اہم ملزم رحمان بھولا کو انٹر پول نے تھائی پولیس کی مدد سے گرفتار کرلیا، پاکستان سے ایف آئی اے کی ٹیم ملزم کو لینے کے لیے جلد روانہ ہوگی۔


Key Baldia factory fire accused arrested in… by arynews

تفصیلات کے مطابق بنکاک پولیس نے ایک ہوٹل کے کمرے سے پاکستانی شخص عبدالرحمان کو حراست میں لیا ہے، ملزم کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ وہ سانحہ بلدیہ فیکٹری کیس میں ملوث ہے جسے انٹر پول کے ذریعے بنکاک پولیس نے گرفتار کیا ہے۔

ذرائع کے مطابق عبدالرحمان المعروف بھولا بلدیہ فیکٹری کیس میں مطلوب اہم اور مرکزی ملزم تھا جسے عدالت نے ہر حالت میں اگلی پیشی پر پیش کرنے کا حکم دیا تھا جس کے بعد انٹر پول کے ذریعے ملزم گرفتاری عمل میں لائی گئی۔

fia-notification

تازہ دم اطلاعات کے مطابق سانحہ بلدیہ فیکٹری کے مرکزی ملزم عبدالرحمان عرف بھولا کو بنکاک سے لانے کے لیے ایف آئی اے کی دو رکنی ٹیم مقرر کردی گئی ہے،ٹیم میں ایف آئی اے کاونٹر ٹیررازم کراچی کے ڈپٹی ڈائریکٹر بدرالدین بلوچ اورایف آئی اے کے انسپکٹر رحمت اللہ ڈومکی شامل ہیں۔

وزارت داخلہ نے دونوں افسران کی تھائی لینڈ روانگی کی منظوری دے دی ہے جس کے بعد ایف آئی اے ٹیم آج رات یا کل صبح مرکزی ملزم عبدالرحمان عرف بھولا کو لینے تھائی لینڈ روانہ ہو جائے گی اور وزارت داخلہ کے احکامات کے مطابق اسے بنکاک سےکراچی منتقل کرے گی۔

 اسی سے متعلق : سانحہ بلدیہ کا ملزم عبد الرحمان عرف بھولا ایئر پورٹ سے گرفتار

واضح رہے کہ گزشتہ سال اپریل میں بھی ملزم عبدالرحمن کی کراچی ا یئر پورٹ سے بیرون ملک جانے کی کوشش کے دوران گرفتاری عمل میں لائی گئی تھی تا ہم ملزم کو نہ تو کسی عدالت میں پیش کیا گیا تھا اور نہ ہی کسی تھانے میں ریکارڈ موجود ہے۔

رحمان بھولا کی گرفتاری کے بعد تھائی لینڈ کی پولیس نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ مجرموں کو اپنی سرزمین پناہ حاصل کرنے نہیں دیں گے، انٹرپول کے ساتھ جرائم کی سرکوبی کے لیے تعاون جاری رکھیں گے۔

تھائی لینڈ پولیس کا کہنا تھا کہ رحمان بھولا کا ڈی این اے ٹیسٹ بھی کرارہے ہیں برآمد سامان خاص طور پر سگریٹ کا فرانزک تجزیہ کیا جارہا ہے جب کہ رحمان بھولا سے متعلق پاکستانی حکام سے بھی رابطے میں ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں