site
stats
عالمی خبریں

نائن الیون، ایک ایسا دن جس نے دنیا کا نقشہ بدل ڈالا

نیویارک : نائن الیون کوآج سولہ سال ہوگئے، سانحے نے دُنیا کو الٹ پلٹ کر رکھ دیا، دنیا کے ایک کونے سے دوسرے کونے تک ملبہ مسلمانوں پر گرا۔

گیارہ ستمبر 2001 ایک ایسا دن جب نیویارک کی فضا میں تین طیارے قہر بن کر داخل ہوئے، دو طیارے دنیا کی بلند ترین عمارت ورلڈ ٹریڈ سینٹر کے ٹوئن ٹاور سے ٹکرائے اورسو منزلہ عمارت کو ملبے کا ڈھیر بنا دیا جبکہ تیسرا طیارہ پنٹاگون کےقریب مار گرایا، واقعے میں تین ہزارافراد ہلاک ہوئے۔

سانحے میں دس ہزارسے زائد زخمی ہوئے جبکہ مالی نقصان کا تخمینہ دس ارب ڈالر لگایا گیا۔

واقعے پر اس وقت کے صدرجارج واکر بُش نے دہشتگردی کے خلاف جنگ کا اعلان کیا اور سات اکتوبردوہزار ایک میں القاعدہ رہنمااُسامہ بن لادن کی تلاش میں افغانستان پرحملہ کردیا، افغانستان کے بعد عراق اور پھر دہشت گردوں کی تلاش میں امریکی ڈرون 2004 میں پاکستان میں بھی داخل ہوگئے اورپھریکےعد دیگرے پوری دُنیا ہی اس آگ کی لپیٹ میں آگئی۔۔

حادثے کے مقام پر قائم گراؤٔنڈ زیرو اور وہاں بنائے جانے والے میوزیم پر ہر سال امریکی شمعیں روشن کرتے ہیں۔

نائن الیون کے پاکستانی معیشت پر اثرات

سانحے میں سیاسی صورت حال تو ایک طرف معاشی اعتبار سے بھی پاکستان کو نئے چیلجز کا سامنا کر پڑا دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان نے اگلی صفحوں میں جنگ لڑی، امریکہ نے ،مالی امداد کا کا وعدہ تو کیا تھا۔ تاہم یہ امداد مزید ڈو مور ڈومور کے مطالبات سے مشروعات رہی۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کو ایک سو اٹھارہ ارب ڈالر کے نقصانات ہوئے، دہشت گردی کا نشان بنانے والے ہزار افراد اس کےعلاوہ ہیں۔

مرکزی بینک کے مطابق صرف معاشی ہی نہیں بلکے سماجی طور پر بھی پاکستان بحران کا شکار ہوا، امریکہ نےفرنٹ لائن فر یق بنانے پر سالانہ ایک ارب ڈالر کی ادائیگی کا وعدہ کیا گیا مگر صرف چودہ ارب روپے حاصل ہوئے، پاکستان نے ملک کے مختلف حصوں میں آپریشنز بھی کئے، ان آپریشن کے باعث اپنے گھروں سے دور ہونے والے افراد کے بحالی بھی ملکی معشیت پر گراں بوجھ ثابت ہوئے۔

غیر ملکی سرمایہ کاروں نے پاکستان کا رخ کرنے سے گریز کیا، دہشت گردوں کے خلاف کریک ڈاون کے باعث ملک میں دہشت گردی کے واقعات میں اضافہ ہوا جو کہ صنعتی اور تجارتی سرگرمیوں میں کمی کا باعث بنا۔

سانحہ نائن الیون نہ صرف امریکا بلکہ پوری دنیا کو دہشتگردی کے خلاف جنگ کی آگ میں دھکیل دیا، جو نہ جانے کب بجھے گی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top