The news is by your side.

Advertisement

ای سی ایل سے نام نکالنے کا کیس، راؤ انوار کی سماعت جمعہ کو مقرر کرنے کی استدعا مسترد

اسلام آباد : سپریم کورٹ میں راؤ انوار کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی نظرثانی درخواست پر سماعت جمعہ کو مقرر کر نے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے کہا ای سی ایل سے نام نکلوانا ہے تو ٹرائل کورٹ سے رجوع کریں۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں جسٹس عمر عطاء بندیال کی سربراہی میں بینچ نے راؤ انوار کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی نظرثانی درخواست پر سماعت کی، دوران سماعت مخالف وکیل کی جانب سے کیس ملتوی کرنے کی استدعا کی گئی۔

وکیل نے کہاکہ بیماری کے باعث دلائل دینا ممکن نہیں، کیس ملتوی کیا جائے، راؤ انوار کے وکیل نے مقدمہ جمعہ کو مقرر کرنے کی استدعا کی ، جس پر عدالت نے کیس جمعہ کو مقرر کرنے کی راؤ انوار کی استدعا مسترد کر دی۔

جسٹس عمر عطاء بندیال نے کہا کہ ممکن ہے اس کیس کی سماعت طویل ہو جائے، جمعہ کے دن طویل کیس نہیں سنتے، جسٹس اعجاز الاحسن کا کہنا تھا سپریم کورٹ میں آپکو کیا جلدی ہے؟ ای سی ایل سے نام نکلوانا ہے تو ٹرائل کورٹ سے رجوع کریں۔

وکیل نے کہا کہ راؤ انوار کا نام سپریم کورٹ کے حکم پر ای سی ایل میں ڈالا گیا، سپریم کورٹ کے حکم کے بعد ٹرائل کورٹ نہیں جا سکتا، جس پر جسٹس عمر عطاء بندیال نے کہا کہ دو ہفتے تک کیس دوبارہ مقرر ہو جائے گا۔

یاد رہے سپریم کورٹ نےنقیب قتل کیس کے ملزم راؤ انوار کی ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست مسترد کردی تھی، چیف جسٹس نے راؤ انوارکوسہولتوں کی فراہمی پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا راؤ انوار بری کیسے ہوگیا ؟ ایک جوان بچہ مار دیا کوئی پوچھنے والا نہیں۔

واضح رہے گذشتہ سال 13 جنوری کو ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کی سربراہی میں پولیس ٹیم نے شاہ لطیف ٹاؤن میں پولیس مقابلہ کا دعویٰ‌کیا تھا. ٹیم کا موقف تھا کہ خطرناک دہشت گردوں کی گرفتاری کے لیے اس کارروائی میں‌ پولیس نے جوابی فائرنگ کرتے ہوئے چار ملزمان کو ہلاک کیا تھا۔ ہلاک ہونے والوں میں نوجوان نقیب اللہ بھی شامل تھا۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے نقیب اللہ کے ماورائے عدالت قتل کا از خود نوٹس کیس مقرر کرتے ہوئے راؤ انوار کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے کا حکم دیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں