The news is by your side.

گندم کے وافر ذخائر موجود لیکن ملک میں آٹے کا بحران شدید، قیمتیں بڑھانے پر کارروائی ہوگی

اسلام آباد: ملک میں آٹے کا بحران شدید ہو گیا ہے، یوٹیلیٹی اسٹورز پر لمبی قطاریں بننے لگیں، دوسری طرف نیشنل فلڈ ریسپانس سینٹر کا کہنا ہے کہ ملک میں گندم کے وافر ذخائر موجود ہیں، اور قلت کا کوئی خدشہ نہیں۔

تفصیلات کے مطابق کوآرڈینیٹر نیشنل فلڈ ریسپانس سینٹر میجر جنرل ظفر اقبال کا کہنا ہے کہ پاکستان میں گندم کے وافر ذخائر موجود ہیں، قلت کا کوئی خدشہ نہیں، ملک میں 7 ملین ٹن گندم موجود ہے، اور ایک ملین ٹن مزید آ رہی ہے۔

انھوں نے کہا لوگوں تک گندم اور آٹا پہنچانے میں مسائل نہیں ہوں گے، ذخیرہ اندوزی کرنے اور قیمت بڑھانے والوں کے خلاف حکومت کارروائی کرے گی۔

کوآرڈینیٹر کا کہنا تھا کہ ملک میں بیجوں کی قلت ہے، جو جلد پوری ہو جائے گی۔

ادھر ملک میں آٹے کا بحران شدید ہو گیا ہے، جس پر عوام کی پریشانی حدوں کو چھونے لگی ہے، یوٹیلیٹی اسٹورز پر لمبی قطاریں لگ رہی ہیں، اور غریب عوام کے لیے دو وقت کی روٹی کا حصول بھی مشکل ہو گیا ہے۔

کوئٹہ میں فی کلو آٹا 130 روپے میں فروخت ہو رہا ہے، آٹے کا 20 کلو کا تھیلا 2350 روپے کا ہو گیا، جلالپور بھٹیاں میں بھی آٹا نایاب ہے، چکی پر 130 روپے کلو ملنے لگا، سکھر میں آٹے کی قیمت تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی، فی کلو قیمت 120 روپے سے بڑھ گئی۔

چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل اختر نواز کا کہنا ہے کہ دوست ممالک کی جانب سے امداد کا سلسلہ جاری ہے، 60 فی صد امدادی سامان سندھ بھجوایا گیا، مزید بھی بھیجا جائے گا، تمام سامان کا ڈیٹا موجود ہے۔

احسن اقبال نے کہا وقت آ گیا ہے کہ پنجاب والے سندھ اور بلوچستان کی مدد کریں، سیلاب سے محفوظ پاکستانی ڈوبے ہوؤں کا ہاتھ تھام لیں تو کسی بیرونی امداد کی ضرورت نہیں پڑے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں