The news is by your side.

Advertisement

کے ایم سی کوارٹرز میں واٹر بورڈ ملازمین کی رہائش کا انکشاف ، عدالت حیران

کراچی : سندھ ہائی کورٹ میں کے ایم سی کوارٹرز میں واٹر بورڈ ملازمین کی رہائش کا انکشاف سامنے آیا، جس پر عدالت حیران ہوگئی اور سوال کیا کیا واٹر بورڈ ملازمین کے ایم سی کو کرایہ دے رہے ہیں؟

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں جہانگیر پارک کےایم سی ملازمین کو متبادل کوارٹرز دینے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی ، دوران سماعت کے ایم سی کوارٹرز میں واٹر بورڈ ملازمین کی رہائش کا انکشاف سامنے آیا۔

کے ایم سی کوارٹرز میں واٹر بورڈ ملازمین کی رہائش پر عدالت نے حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے استفسار کیا کیا واٹر بورڈ ملازمین کے ایم سی کو کرایہ دے رہے ہیں؟

واٹر بورڈ حکام نے بتایا کہ ہمارے ملازمین کوئی کرایہ ادا نہیں کرتے، کے ایم سی نے کرایہ کبھی مانگا ہی نہیں تو عدالت نے پوچھا کے ایم سی ملازمین کا کرایہ کٹ رہا ہے تو ان سے کیوں نہیں لیتے؟

عدالت نے کےایم سی اور واٹربورڈ حکام کو کوارٹرز کی تفصیلات آپس میں شیئر کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا 60 روز میں کوارٹرز سے متعلق مسائل حل کیے جائیں۔

عدالت نے کہا واٹر بورڈ ملازمین سے کوارٹرز کا کرایہ و دیگر واجبات لیےجائیں اور کےایم سی اپنےملازمین کوکوارٹرزمیں اکاموڈیٹ کرے۔

عدالت نے کےایم سی وکیل سے مکالمے میں کہا کےایم سی کی لاپرواہی،غفلت سےملازمین متاثر ہو رہے ہیں، کے ایم سی میں جواب دہی والا کوئی نہیں، کےایم سی کےملازمین بھٹکتے پھر رہے ہیں۔

جسٹس سید حسن اظہر رضوی نے مزید کہا کہ آپ نے جہانگیر پارک سے انہیں کورنگی بھیجا، جہاں بھیجا وہاں پہلے ہی قبضے ہیں ، 5سال ہو چکے، آپ کےاپنےہی ملازمین دربدرہیں۔

اسسٹنٹ ڈائریکٹر اکاموڈیشن عدالت میں پیش ہوئے ، جسٹس سید حسن اظہر رضوی نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر اکاموڈیشن سے مکالمے میں کہا کہ آپ کے ریٹائرڈ افسران اور ملازمین گھر خالی نہیں کرتے،آپ کر کیا رہے ہیں؟ان ملازمین کو اکاموڈیشن کون دے گا؟

درخواست گرار نے کہا جہانگیرپارک تزئین و آرائش کےدوران5ملازمین سےکوارٹرخالی کرائے، جس کے بعد واٹر بورڈ کی زمین پر بھی کے ایم سی ملازمین رہائش پذیر ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں