پنجاب اسمبلی میں مقبوضہ وادی میں 12 کشمیریوں کی شہادت کیخلاف متفقہ قرارداد منظور
The news is by your side.

Advertisement

پنجاب اسمبلی میں مقبوضہ وادی میں 12 کشمیریوں کی شہادت کیخلاف متفقہ قرارداد منظور

لاہور : پنجاب اسمبلی میں مقبوضہ وادی پر بھارتی جارحیت اور 12 کشمیریوں کی شہادت کیخلاف متفقہ قرارداد منظور کرلی اور اپوزیشن لیڈر نے کشمیر کمیٹی کے سربراہ سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی کا اجلاس سپیکر رانا محمد اقبال کی زیرصدارت ایک گھنٹہ تاخیر سے شروع ہوا، ایوان نے مقبوضہ وادی پر بھارتی جارحیت اور 12 کشمیریوں کی شہادت کیخلاف قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی۔

جس میں کہا گیا ہے کہ بھارتی جارحیت انسانی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے، پاکستانی قوم کشمیریوں کے حقوق دلانے کیلئے ان کے ساتھ کھڑی ہے۔

قرارداد میں حکومت پر زور دیا گیا کہ وہ کشمیریوں پر مظالم بند کرانے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے۔

پوائنٹ آف آرڈر پر بات کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے مطالبہ کیا کہ کشمیر کمیٹی کے سربراہ فوری طور پر مستعفی ہوں اور کسی فعال اور سرگرم شخص کو کشمیر کمیٹی کی سربراہی دی جائے۔

ایوان کی کارروائی مکمل ہونے پر اجلاس غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دیا گیا ہے۔


مزید پڑھیں : مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوج نے11کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا


یاد رہے بھارتی فورسزنے ہفتے کے روز برہان وانی کے ساتھی سبزر احمد بٹ سمیت گیارہ کشمیری نوجوان شہید کئے تھے، پلوامہ کے علاقے ترال میں برہان وانی کے قریبی ساتھی کمانڈر سبزار بھٹ نے دو ساتھیوں سمیت جام شادت نوش کیا جبکہ رام پور اور اڑی میں بھارتی فوج نے آٹھ حریت پسند شہید کئے تھے۔

اس کی اطلاع پورے کشمیر میں جنگل میں آگ کی طرح پھیل گئی اور پورا کشمیر سراپا احتجاج بن گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں