مقبوضہ کشمیرمیں آصفہ بانو سے زیادتی وقتل کے خلاف مذمتی قرارداد جمع
The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیرمیں آصفہ بانو سے زیادتی وقتل کے خلاف مذمتی قرارداد جمع

لاہور : پنجاب اسمبلی میں مقبوضہ کشمیرمیں آصفہ بانوسےزیادتی وقتل کےخلاف مذمتی قراردادجمع کرادی گئی ، جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ بھارتی حکومت آصفہ بانو کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کرے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی میں مقبوضہ کشمیرمیں آصفہ بانوسےزیادتی وقتل کے خلاف مذمتی قراردادجمع کرادی، اسمبلی میں قرارداد مسلم لیگ(ن)کی رکن حناپرویزبٹ کی جانب سے جمع کرائی گئی۔

قرارداد میں کہا گیا کہ مقبوضہ کشمیر میں8سال کی آصفہ کودرندگی کانشانہ بنانا انسانیت کی توہین ہے، بھارت سب سے بڑا جمہوریت اور انسانی حقوق کا علمبرار بنتا ہے۔

جمع کرائی گئی قرارداد میں کہا گیا ہے کہ آصفہ بانو کی وکیل کو بھی دھمکیاں دی جا رہی ہیں، خاتون وکیل نےعدالت کوبتایاکہ انہیں بھی ریپ کی دھمکی ملی ہے۔

قرارداد میں مطالبہ کیا ہے کہ بھارتی حکومت آصفہ بانو کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کرے اور بچی کے والدین اور خاتون وکیل کو مکمل تحفظ فراہم کیا جائے۔

یاد رہے کہ مقبوضہ کشمیر میں انتہاپسند ہندوؤں کی معصوم آصفہ سے درندگی کےبعد پوری دنیا میں بھارت کے خلاف آواز اٹھنا شروع ہوگئیں اور  ملزموں کوکیفرکردارتک پہنچانے کا مطالبہ کررہی ہے۔


مزید پڑھیں : مقبوضہ کشمیر: آٹھ سالہ بچی زیادتی کے بعد قتل، وادی میں شدیدمظاہرے، فنکاروں‌ کا احتجاج


انتہا پسندوں کی جانب سے آصفہ بانو کی وکیل کو زیادتی اور قتل کی دھمکیاں مل رہی ہے، وکیل آصفہ بانو دپیکا سنگھ نے  سپریم کورٹ سےسیکیورٹی فراہم کرنے کا مطالبہ  کرتے ہوئے کہا کہ مجھے اغوا اور قتل کی دھمکیاں دی جارہی ہیں، ہوسکتا ہے مجھےعدالت میں کیس لڑنے سے بھی روک دیا جائے۔

اس سے قبل آصفہ بانوکے والدین کوبھی قتل کے بعد دھمکیاں ملنے پراپنا آبائی علاقہ چھوڑنا پڑا تھا۔

واضح رہے کہ مقبوضہ کشمیر میں چرواہے کی بیٹی آصفہ بانو کو جنوری میں مویشی چرانے گئی تھی، جسے سات ہندوپولیس اہلکاروں نے اغواکیا اور مندرمیں قید کرکے چار روز تک زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد بے دردی سے قتل کرکے جھاڑیوں میں پھینک دیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں