The news is by your side.

Advertisement

روہنگیا مسلمانوں کا قتل عام: مختلف اسمبلیوں میں مذمتی قراردادیں

اسلام آباد: میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام اور لرزہ خیز مظام کے خلاف سینیٹ، قومی اور صوبائی اسمبلیوں میں مذمتی قراردادیں جمع کروائی گئیں۔ قراردادوں میں اقوام متحدہ کے ذریعے میانمار میں مسلمانوں کی نسل کشی رکوانے کا مطالبہ کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق روہنگیا مسلمانوں پر ظلم کے خلاف متحدہ قومی موومنٹ پاکستان نے قومی اسمبلی میں مذمتی قرارداد جمع کروائی۔

قرارداد میں کہا گیا کہ روہنگیا کے مسلمانوں پر مظالم کی انتہا کر دی گئی۔ اقوام متحدہ کے ذریعے برما میں مظالم کا سلسلہ رکوایا جائے۔

قرارداد کے متن میں مطالبہ کیا گیا کہ روہنگیا متاثرین کو ہر ممکن مدد فراہم کی جائے۔ متاثرین کو ہمسایہ ممالک میں داخلے کی اجازت دی جائے۔

ایم کیو ایم پاکستان نے اسی نوعیت کی تحریک التوا سینیٹ میں بھی جمع کروائی۔


سندھ اسمبلی

روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام کے خلاف صوبہ سندھ کی اسمبلی میں 2 قراردادیں جمع کروائی گئیں جن میں سے ایک متحدہ قومی موومنٹ پاکستان اور دوسری پاکستان تحریک انصاف نے جمع کروائی۔

ایم کیو ایم کی جانب سے جمع کروائی گئی قرارداد میں کہا گیا کہ روہنگیا کے مسلمانوں پر مظالم کی انتہا کردی گئی۔ اقوام متحدہ کے ذریعے برما میں مظالم کا سلسلہ رکوایا جائے۔

پاکستان تحریک انصاف نے بھی اپنی قرارداد میں برما کے مسلمانوں پر لرزہ خیز مظالم کی مذمت کی۔ قرارداد میں حکومت سے برما میں مسلمانوں کے قتل عام کا معاملہ عالمی سطح پر اٹھانے کا مطالبہ بھی کیا گیا۔


پنجاب اسمبلی

صوبہ پنجاب کی اسمبلی میں بھی پاکستان تحریک انصاف نے میانمار میں روہنگیا مسلمانوں پر لرزہ خیز ظلم کے خلاف قرارداد جمع کروائی۔

مذمتی قرارداد تحریک انصاف کے شعیب صدیقی کی جانب سے جمع کرائی گئی جس میں برما کی حکومت کے خلاف اقوام متحدہ میں بھر پور آواز اٹھانے کا مطالبہ کیا گیا۔


خیبر پختونخواہ اسمبلی

صوبہ خیبر پختونخواہ کی اسمبلی میں بھی روہنگیا مسلمانوں پر دردناک مظالم کے خلاف مذمتی قرارداد جمع کروائی گئی۔

قرارداد میں وفاقی حکومت سے برما کی مسلمانوں کی بھرپور مدد کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا گیا کہ پاکستان، او آئی سی اور سیکیورٹی کونسل میں برمی مظالم کے خلاف آواز اٹھائے۔

قرارداد میں مزید کہا گیا کہ پاکستان بھی ترک حکومت کے اقدمات کی تقلید کرے۔

یاد رہے کہ ترکی نے بنگلہ دیش سے روہنگیا مسلمانوں کے لیے اپنی سرحدیں کھولنے کی اپیل کرتے ہوئے یقین دہانی کروائی ہے کہ پناہ گزینوں کے تمام اخراجات ترک حکومت برداشت کرے گی۔


 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں