The news is by your side.

Advertisement

برطانیہ کا باصلاحیت نوجوان سب سے کم عمر امیر ترین شخص کیسے بنا ؟

برطانیہ کا 26 سالہ نوجوان جو خود ساختہ صلاحیتوں ک امالک بھی ہے، ملک کا سب سے کم عمر ترین ارب پتی شخص بن گیا۔ اس کی یہ کامیابی اس کے والدین یا خاندان کی مرہون منت نہیں بلکہ یہ دولت اس نے اپنی محنت اور لگن سے حاصل کی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق عالمی جان لیوا وبا کورونا ووئرس کے باعث جاری لاک ڈاؤن میں جہاں لوگ اپنی جمع پونجی سے محروم ہوئے تو دوسری جانب کوئی دیکھتے ہی دیکھتے ارب پتی بن گیا۔

ایک ایسا ہی26سالہ نوجوان جانی بوفرحت ہے جس کا قدرت نے ہاتھ تھاما اور دولت اس کے قدموں پر ڈال دی، برطانیہ کے جانی بوفرحت نامی نوجوان نے ایک موبائل ایپ تخلیق کی جو دنیا بھر میں بہت مقبول ہوئی۔

رپورٹ کے مطابق صرف ایک سال کے عرصے کے دوران مانچسٹر یونیورسٹی میں گریجویٹ کا طالب علم دیکھتے ہی دیکھتے یورپ کی ایک بڑی کاروباری شخصیت بن گیا۔

جانی بوفرحت کی ایپ کانفرسوں کو لائیو اسٹریم کرتی ہے اور اس کی قیمت 4.1 ارب پاونڈ ہے۔ رپورٹ کے مطابق جانی بوفرحت نے یہ ایپ اس وقت بنائی جب وہ ایک بیماری کے باعث بستر پر موجود تھے۔

سالانہ رویو کی رپورٹ کے مطابق وبا کے باوجود برطانیہ کے ارب پتی اشخاص کی دولت میں597 ارب پاؤنڈ اضافہ ہوا ہے۔

جہاں کورونا سے کئی کمپنیوں کا دیوالیہ نکل گیا ہے وہی برطانیہ کے 250 امیر ترین افراد نے گزشتہ سال میں ہر روز 10 لاکھ پاونڈ تک کمائی کی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں