The news is by your side.

ایران اور عالمی طاقتوں کے درمیان ہونے والا ایٹمی معاہدہ ناقص ہے: سعودی وزیر خارجہ

واشنگٹن: سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر کا کہنا ہے کہ ایران اور عالمی طاقتوں کے درمیان ہونے والا ایٹمی معاہدہ ناقص ہے۔ ان کا یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان امریکی صدر ٹرمپ سے ملاقات کے لیے امریکا پہنچ چکے ہیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان 3 ہفتے کے دورے پر آج امریکا پہنچے ہیں۔ سعودی ولی عہد امریکی صدر ٹرمپ اور دیگر سیاسی و کاروباری شخصیات سے ملاقات کریں گے۔

شہزادہ محمد بن سلمان نیویارک میں اقوام متحدہ کے جنرل سیکریٹری انٹونیو گٹریس سے بھی ملاقات کریں گے۔ یہ محمد بن سلمان کا ولی عہد بننے کے بعد امریکا کا پہلا دورہ ہے جسے نہایت اہم خیال کیا جارہا ہے۔

وہ اس سے قبل اپنا پہلا غیر ملکی دورہ برطانیہ کا کر چکے ہیں۔

سعودی ولی عہد سے قبل سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر واشنگٹن پہنچے جہاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے ایرانی ایٹمی معاہدے کو ناقص قرار دیا۔

سعودی وزیر خارجہ نے ایران پر ایک بار پھر الزام عائد کیا کہ تہران کا رویہ خطے میں عدم استحکام کا باعث ہے۔ ضرورت ہے کہ ایران کے خلاف سخت پالیسیاں اپنائی جائیں۔

ان کے مطابق وہ اس سلسلے میں اقدامات کا جائزہ لے رہے ہیں۔

سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے یمن میں حوثیوں کی مدد کرنے اور شام میں بشار الاسد کی حمایت کرنے پر بھی ایران کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

یاد رہے کہ گزشتہ کچھ عرصے کے دوران امریکا اور سعودی عرب کے تعلقات میں بہتری دیکھنے میں آئی ہے۔ امریکی صدر ٹرمپ نے بھی صدارت کا حلف اٹھانے کے بعد اپنا پہلا غیر ملکی دورہ سعودی عرب کا کیا تھا جب دونوں ممالک نے متعدد معاہدوں پر اتفاق کا اظہار کیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں