kidnap لاکھوں روپے لےجانے والا تاجر اہلکاروں کے ہاتھوں لٹ گیا police
The news is by your side.

Advertisement

لاکھوں روپے لےجانے والا تاجر اہلکاروں کے ہاتھوں لٹ گیا

کراچی : ایسٹ زون میں پولیس کی اسپیشل پارٹیاں پھر اغواء برائے تاوان کی وارداتیں کرنے لگیں۔ شارع فیصل پرمنی ایکسچینج سے56لاکھ روپے نکال کر لےجانے والا تاجر مبینہ اہلکاروں کے ہاتھوں لٹ گیا۔

تفصیلات کے مطابق عوام کے رکھوالے ہی اغوا کار بن گئے۔ کراچی کی اہم شاہراہ شارع فیصل پر منی ایکسچینج سے56لاکھ روپے لے کر نکلنے والا تاجر مقصود میمن مبینہ اہلکاروں کے ہاتھوں لٹ گیا۔

مذکورہ تاجر گیارہ اکتوبر کو منی چینجرسے نکلا تو مبینہ پولیس اہلکاروں نے اسے اغواکر لیا۔ اہلکارآنکھوں پرپٹی باندھ کرتاجر کو ساتھ لے گئے۔

تاجر مقصود میمن نے الزام عائد کیا ہے کہ مجھے نامعلوم مقام پر لے جاکر رات بھر تشدد کیا گیا اور رات چار بجے ائیرپورٹ اسٹار گیٹ پر چھوڑدیا۔

تاجر مقصود میمن نے پولیس کو بیان دیا ہے کہ اس کے پاس54لاکھ غیر ملکی اوردو لاکھ تیس ہزار پاکستانی روپے تھے، اہلکار میری زیرو میٹر گاڑی بھی اپنے ساتھ لے گئے۔

واضح رہے کہ اس سے دو روز قبل کراچی کے فیروز آباد تھانے پر چھاپہ کے بعد جوڈیشل مجسٹریٹ نے تاوان کیلئے اغواء کیے گئے تاجروں کو بازیاب کرایا تھا۔

متاثرہ تاجر نے واقعے کی سی سی ٹی وی بھی پولیس کو دی۔ واقعے کو دو روز گرزنے کے باوجود تاحال مقدمہ درج نہیں کیا گیا ہے۔ پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں لٹنے والا تاجر مقصود میمن دبئی میں الیکٹرانکس کا کام کرتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں