The news is by your side.

Advertisement

سمندری مخلوقات کے بارے میں‌ آگاہی دینے والی مچھلی

بیجنگ: چینی سائنس دانوں نے زیر آب موجود مخلوق اور دیگر راز جاننے کے لیے مصنوعی مچھلی تیار کرلی جسے روبوٹ فش کا نام دیا گیا ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق چینی سائنس دانوں نے روبوٹ فش کو ’سنیل مچھلی‘ کی شکل کا بنایا تاکہ اُسے گہرے پانی میں بھیج کر نئی دریافت کی جاسکیں۔

ماہرین کا ماننا ہے کہ اس مچھلی کی مدد سے وہ پہلے سے زیادہ بہتر اور آسان طریقے سے سمندر کی گہرائی اور اس میں موجود مخلوقات کے بارے میں معلومات حاصل کرسکیں گے۔

سائنس دانوں نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کی بنائی گئی روبوٹ مچھلی سمندر کے گہرے ترین مقام ’میریانہ ٹرینچ‘ تک جاسکے گی۔ واضح رہے کہ اس مقام پر اب تک چند ہی ماہرین پہنچ سکے ہیں جس میں کروڑوں ڈالر کے اخراجات آئے تھے۔

مزید پڑھیں: انسان جیسے دانت اور زیبرے کے ڈیزائن والی عجیب الخلقت مچھلی

یہ بھی پڑھیں: زندہ مچھلی ماہی گیر کے نرخرے میں‌ پھنس گئی، ناقابل یقین واقعہ

ماہرین کے مطابق اس مچھلی کو سیلیکون سے تیار کیا گیا، جسے ریموٹ سے چلایا جائے گا۔ اپنے لچک دار جسم کی وجہ سے یہ مچھلی پانی میں کسی بھی سمت تیز ترین تیراکی کرسکتی ہے۔

اس مچھلی کو ریموٹ میں لگے کیمرے کی مدد سے دیکھا جاسکے گا، جبکہ روبوٹ فش میں نصب کیمرے کی مدد سے تصاویر اور ویڈیوز بھی بنانا آسان ہوگا۔

سائنسدانوں کے مطابق روبوٹ مچھلی بنانے کا مقصد مختلف آبی جانداروں اور اُن کی زندگیوں کے بارے میں‌ آگاہی حاصل کرنا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں