The news is by your side.

Advertisement

کابل میں 23 راکٹ حملے، 8 افراد جاں بحق، پاکستان کی شدید مذمت

کابل/اسلام آباد: افغانستان کے دارالحکومت کابل میں 23 راکٹ حملوں میں 8 افراد جاں بحق، جب کہ 31 زخمی ہو گئے۔

افغان میڈیا کے مطابق آج کابل میں مختلف مقامات پر ہوئے دھماکوں اور راکٹ حملوں کے نتیجے میں آٹھ افراد جاں بحق اور 31 زخمی ہو گئے۔

افغان وزارت داخلہ کے ترجمان طارق آریان نے میڈیا کو بتایا کہ دہشت گردوں نے راکٹ ایک چھوٹے ٹرک پر لادے تھے، اس بات کا پتا لگانے کے لیے تحقیقات کی جا رہی ہیں کہ گاڑی سیکورٹی کے نوٹس میں آئے بغیر شہر کے اندر کیسے آگئی۔انھوں نے کہا کہ حملہ آج صبح کیا گیا جس میں رہائشی علاقوں میں مارٹر فائر کیے گئے، جس کے نتیجے میں متعدد عمارتیں اور گاڑیاں تباہ ہو گئی ہیں۔

افغان میڈیا کا کہنا ہے کہ ایک راکٹ ایران کی ایمبیسی کے کمپاؤنڈ میں بھی گرا، سفارت خانہ ایران میں گرنے والے راکٹ سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

طالبان نے کہا ہے کہ حملہ ان کی جانب سے نہیں کیا گیا، حملے میں 3 پولیس اہل کار بھی جاں بحق ہوئے، جب کہ 11 زخمی ہوئے۔

واضح رہے کہ یہ حملے ایک ایسے وقت میں ہوئے ہیں جب امریکی وزیر خارجہ مائک پومپیو دوحہ میں طالبان مذاکرات کاروں سے امن مذاکرات دوبارہ شروع کرنے کی کوشش میں ملاقات کرنے والے ہیں۔

پاکستان نے کابل میں راکٹ حملوں کی شدید مذمت کی ہے، دفتر خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ حملوں میں قیمتی جانیں ضائع ہوئیں اور بہت سے لوگ زخمی ہوئے، ہم متاثرہ خاندانوں سے تعزیت کرتے ہیں، اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا گو ہیں۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ عالمی برادری کی افغان امن عمل کے لیے کوششیں آگے بڑھ رہی ہیں، ایسے وقت میں امن خراب کرنے والوں سے چوکنا رہنا ہوگا، پاکستان دہشت گردی کی مذمت کرتا ہے۔

ترجمان نے کہا ہم افغانستان کے عوام کی مکمل حمایت اور ان کے ساتھ بھرپور اظہار یک جہتی کرتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں