The news is by your side.

Advertisement

امریکی محکمہ انصاف کی ٹرمپ کے دوست کو کم سزا کی سفارش پر ججز کو تشویش

واشنگٹن: امریکی صدر ٹرمپ کے قریبی ساتھی کے خلاف مقدمے میں محکمہ انصاف کی جانب سے مبینہ مداخلت پر ججز نے اظہار تشویش کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی محکمہ انصاف نے گزشتہ ہفتے ٹرمپ کے دوست راجر اسٹون کو کم سزا دینے کی سفارش کی تھی، محکمہ انصاف کی مبینہ مداخلت پر ججوں نے آج قومی ایسوسی ایشن کا ہنگامی اجلاس طلب کر لیا۔

انڈیپینڈنٹ فیڈرل ججز ایسوسی ایشن کے سربراہ ڈسٹرکٹ جج سنتھیا روف نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امریکی ججوں کو اس صورت حال پر تشویش ہے، ججوں پر انفرادی حملے ہو رہے ہیں، جیوری معمول کی میٹنگ تک انتظار نہیں کر سکتی۔

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ محکمہ انصاف نے ٹرمپ کے ٹویٹ کے بعد کم سزا کی سفارش کی تھی، راجر اسٹون پر کانگریس سے جھوٹ بولنے سمیت متعدد الزامات ثابت ہو چکے ہیں۔ خیال رہے کہ امریکی صدر ٹرمپ کے قریبی ساتھی راجر اسٹون کی سزا کا فیصلہ کل سنایا جائے گا۔

راجر اسٹون نے ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف روس کے سلسلے میں ہونے والی تحقیقات میں بھی رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کی تھی، جب کہ ٹرمپ نے راجر اسٹون کے خلاف تحقیقات کو جعلی قرار دیا تھا.

راجر اسٹون صدر ٹرمپ کے پرانے قریبی دوست ہیں، ان پر 15 نومبر کو کانگریس کی تحقیقات کے دوران رکاوٹ ڈالنے کا الزام ثابت ہو چکا ہے، یہ تحقیقات 2016 کے امریکی صدارتی انتخابات سے متعلق تھیں۔ اسٹون کے خلاف 7 الزامات ثابت ہوئے۔ جنوری 2019 میں اسپیشل کاؤنسل رابرٹ میولر نے ان پر رکاوٹ کے ایک، جھوٹے بیانات کے پانچ اور گواہ کو گمراہ کرنے کے ایک الزام کے تحت فرد جرم عائد کی تھی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں