site
stats
لائف اسٹائل

تصویری رپورٹ: چترال میں گلاب کے پھولوں نے وادی میں رنگ بھردیے

چترال: جنت نظیر وادی چترال کو ویسے بھی قدرت نے حسین دینے میں بخل سے کام نہیں لیا ہے اورانتہائی سخاوت سے قدرت نے چترال پر اپنے حسن کے خزانے کھولے ہیں مگر چترال کے مختلف علاقوں میں جگہ جگہ لوگوں نے گھروں ، مہمان خانوں اور لان میں گلاب کے رنگ برنگے پھول لگائے ہیں جس سے اس قدرتی وادی کی حسن میں مزید اضافہ ہوا ہے۔

چترال کے مرد وخواتین دونوں نہایت باذوق اور نفیس مزاج لوگ ہیں جہاں گھر کا کوئی کونا حالی دیکھا وہاں زمین کھودی اورپھول اگادئیے۔ بعض گھروں میں جہاں زمین پر جگہ کی تنگی یا کمی کی وجہ سے پھول اگانے کی جگہہ نہیں ہوتی تو خواتین کسی بالٹی، کنستر، ٹین یا کسی بھی فالتو برتن میں مٹی ڈال کر اس میں پھول بوتے ہیں اور گھر کی خوبصورتی میں اضافہ کرتے ہیں۔


روشنی بھرے نرگس کے پھولوں کی بہار


 گلاب کو پھولوں کا بادشاہ سمجھا جاتا ہے اور گلاب کی کئی قسمیں ہیں مگر ان میں سرح، گلابی، میرون، زرد، سفید رنگ کے گلاب بہت مشہور ہیں۔

گلاب کی پھول اگر ایک طرف گھروں کی حوبصورتی میں اضافہ کرتی ہے تو اس کی میٹھی میٹھی خوشبوں گھر کے مکینوں کی خوشیوں میں بھی اضافہ کرتی ہے اور طبیعت کو ہشاش بشاش رکھتا ہے۔


ایسا منفرد پھول جو اذان کی آواز سن کر کھل اٹھتا ہے


 گلاب کے بارے میں پشتو زبان میں ایک مصرعہ بھی مشہور ہے کہ ’’ گلاب د گلو شہزادہ دے‘ رامبیل چامبیل ئے نوکران نیولے دی‘‘۔ یعنی گلاب تمام پھولوں کا بادشاہ (شہزادہ ) ہے اور رامبیل، چنبیلی کے پھول اس کے نوکر ہیں۔

کچھ بھی ہو مگر پھول انسان کی طبیعت کو خوش رکھتا ہے اوران کو دیکھ کر طبیعت خوشگوار ہوجاتی ہے۔ اگرحکومتی سطح پر بھی سڑکوں کے کنارے خالی جگہوں میں کیاریاں بناکر ان میں پھول لگائے جائیں توجہاں ایک جانب دیدہ زیب نظارے علاقے کی خوبصورتی کو بڑھائیں گے وہیں لوگوں کی ٹینشن یعنی ذہنی تناؤ میں بھی کمی آئےگی۔


یہ تصاویر آپ کے ذہن کو تروتازہ کردیں گی



Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top