The news is by your side.

Advertisement

اسلام قبول کرنے والی کینیڈین بلاگر کا حج پر جانے کا اعلان

اوٹاوا: کینیڈا سے تعلق رکھنے والی معروف بائیکر گرل اور ٹریول وی لاگر روزی گیبریئل نے کہا ہے کہ میں خود کو مسلمان سمجھتی ہوں اور آئندہ برس حج یا عمرے کی ادائیگی پر جاؤں گی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹاگرام پر کینیڈین بائیکرگرل نے اپنی تفصیلی پوسٹ میں لکھا کہ ’مجھے اسلام قبول کرنے کے اعلان پر لوگوں کی جانب سے بہت زیادہ پزیرائی ملی، مجھے اس قدر محبتیں ملنے کا اندازہ نہیں تھا‘۔ انہوں نے نیک خواہشات کا اظہار کرنے والوں کا شکریہ ادا کیا اور لکھا کہ ’نئے مرحلے پر ملنے والی محبتوں اور تعاون پر میں سب کی مشکور ہوں‘۔

انہوں نے لکھا کہ ماضی کے خیالات اور اللہ سے تعلق کی بنا پر تکنیکی اعتبار سے خود کو بھی مسلمان سمجھتی تھی، میرے لیے اسلام قبول کرنے کے فیصلے کے بعد احکامات یا کچھ بھی بالکل نیا نہیں ہے، اب میں خود کی تکالیف سے چھٹکارا حاصل کر کے آزادی اور حقوق کے ساتھ نئی زندگی گزار رہی ہوں، میرا قلب و ذہن پرامن، شعوری اور سیدھے راستے پر یکسوئی کے ساتھ چلنے کا حتمی فیصلہ کرچکا ہے۔

گیبریئل نے لکھا کہ ’میں نے اسلام قبول کرنے کا اعلان کسی بھی قسم کی پذیرائی حاصل کرنے کے لیے نہیں کیا، لوگوں کی توجہ نے مجھے مشکل میں ڈال دیا، میرا اعلان محض اس لیے تھا کہ دنیا کے سامنے خود کو جواب دہ محسوس کرسکوں، میں اپنی نیت اور محبت کے ساتھ خود کو بہترین صورت میں ڈھالنے کے لیے مکمل طور پر تیار ہوں‘۔

مزید پڑھیں: پاکستان کا دورہ کرنے والی کینیڈین بلاگر نےاسلام قبول کرلیا

اسلام قبول کرنے کے اعلان کے بعد لوگوں کی جانب سے پوچھے جانے والے سوالات کا کینڈین گرل نے مختصر جواب بھی دیا۔

انہوں نے لکھا کہ ’میں اپنا نام تبدیل نہیں کررہی، نا ہی کسی فرقے کا انتخاب کیا، نہ ہی اسلام قبول کرنے کے بعد کسی سے شادی کی خواہش مند ہوں، اہل خانہ نے بھی میرے فیصلے کو تسلیم کیا اور آئندہ سال حج یا عمرے کی ادائیگی کے لیے جاؤں گی‘۔

روزی نے لکھا کہ ’میں اپنی سیاحت اور بائیکنگ کو جاری رکھوں گی، حجاب کی شرط لازمی نہیں ہے‘۔

کینیڈین بلاگر نے لکھا کہ بیشتر صارفین کی جانب سے موصول ہونے والا ردعمل مثبت تھا، اسی طرح توقع کے مطابق کچھ لوگوں کا ردعمل منفی بھی رہا جنہیں صرف نظر انداز کیا۔ انہوں نے مزید لکھا کہ ’بطور انسان ہم جس بات کو سمجھ نہیں سکتے اس سے خوفزدہ رہتے ہیں، میں چاہوں گی کہ پوری انسانیت کے لیے ایسی مثال بن سکوں، جو اسلام کے بہتر طور پر سمجھنے کا ذریعہ بنوں، لوگوں کے درمیان فاصلے ختم کروں، انہیں قریب لاؤں تاکہ ہم سب پرامن زندگی گزار سکیں۔‘

 

View this post on Instagram

 

HUMBLED GRATITUDE 🙏 🌟 . I never in my wildest dreams would have imaged the reaction I received the other day when announcing my decision to revert to Islam. The attention came as an overwhelming shock to me as I was flooded with messages and calls. I’m truly grateful for the outpouring of love and support as I start this new path in life. As I mentioned before- I already technically considered myself “Muslim”, having the faith and connection to God and creation I did on my life’s journey. . But this is a new chapter for me. In the sense that the fear and pain I held onto has finally dissipated and I’m free to walk the fully surrendered life, dedicating my heart and mind to fulfilling the most peaceful, conscious and righteous path🙏 . My public announcement was not something to gain attention from or build my following (I actually get overwhelmed easily by attention and makes me uneasy) It was a testimony and declaration to make myself accountable and have the whole world as my witness. With the intention and love in my heart, that I am now fully ready to commit everything in my being- to become the very best version of myself. . Many common questions keep coming in, which I answered previously on stories and a post, which included; . Will I change my name? No 🌹 Does my family accept my path? Yes Will I choose a Sect? No Will I marry you? NO !!! 😂🤦🏼‍♀️ Will I do Hajj/Umrah ? Yes, within the next year Will I wear A permanent Hijab ? No, it’s not compulsory Will I stop biking/touring? HECK NO! . Although the majority of comments were full of love and support, I also received a bit of backlash (to be expected) Mostly driven by fear,ignorance, and lack of tolerance, I was scorned with indignant preachings. . As humans, we are afraid of what we do not understand. Let me be that voice and example for all of humanity, bridging the gap, to truly understand what ISLAM is and to live a peace filled connected life, and InshaAllah, hearts will be softened and minds will be opened, for more peace, acceptance and understanding. To be a beacon of light for all. Ameen 🙏💗 . 📸 Self portrait with tripod and remote . 🐱 A kitten I rescued named skardu

A post shared by Rosie (@rosiegabrielle) on

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں