روزہ انسان کو کمزور نہیں بلکہ مضبوط کرتا ہے -
The news is by your side.

Advertisement

روزہ انسان کو کمزور نہیں بلکہ مضبوط کرتا ہے

ہمارے کریم رب نے ماہ رمضان جیسی نعمت عطا کرکے اپنے کرم کی انتہا کر دی کہ اپنی رحمت، مغفرت سے اپنے گناہ گار بندوں کو بیماریوں سے بچانے کا ذریعہ یکجا کر دیا ھے۔

روزے کا مقصد تقویٰ کی صفت پیدا کرنا ھے اور یہ تقویٰ قرآنِ پاک سے ہدایت حاصل کرنے کے لیے بھی ضروری ھے. اللہ رب العزت سے زیادہ کون اس ضرورت اور حقیقت سے واقف ہے۔

اُس رب تعالیٰ نے اتنا پیارا بندوبست کیا ہے کہ رمضان اور قرآن کو ایک اہم رشتے میں پرو دیا۔ جس رات قرآنِ مجید نازل کیا. اُسی رات رمضان کا بھی نزول فرمایا۔

روزے کے حیرت انگیز طبی فوائد:

ہفتے میں سولہ گھنٹے کے ایک روزے سے انسانی جسم کو حیرت انگیز طبی فوائد حاصل ہوتے ہیں۔ بلا شبہ روزہ ایک مقدس عبادت ہے اور اس کا اجرو ثواب صرف پروردگار ہی دے سکتا ہے مگر روزے کے نتیجے میں انسان کو ایسے حیرت انگیز طبی فوائد بھی حاصل ہوتے ہیں جن کا عام لوگ تصور بھی نہیں کر سکتے۔

روزہ بڑھاپے کے اثرات کم کرنے میں مدد دیتا ہے:

ایک ہفتے میں 16 گھنٹوں کا روزہ بڑھاپے کے اثرات کم کرنے میں مدد دیتا ہے۔ ماہرین کے مطابق یہ تاثر درست نہیں کہ روزہ انسان کو کمزور کر دیتا ہے۔ روزہ رکھنے سے انسان بڑھاپے کو روکنے کی کامیاب کوشش کر رہا ہوتا ہے۔ روزے کی حالت میں انسانی جسم میں موجود ایسے ہارمونز حرکت میں آجاتے ہیں جو بڑھاپے کے خلاف مزاحمت کرتے ہیں۔روزہ کینسر، امراض قلب اور شریانوں کی بیماریوں کے آگے بھی ڈھال ہے۔

روزہ جلد کی تازگی کو برقرار رکھتا ہے:

ماہرین کا کہنا ہے کہ روزہ انسان کی ظاہری خوبصورتی، جلد کی تازگی، بالوں حتیٰ کہ ناخنوں کے لیے بھی مفید ثابت ہوتا ہے۔ روزے سے انسانی جلد مضبوط ہوتی اور اس میں جھریاں کم ہوتی ہیں۔ گرمی کے موسم میں آنے والے ماہ صیام میں انسانی جسم کو روزے کے عالم میں پانی کی زیادہ ضرورت محسوس ہوتی ہے۔ سخت گرمی میں جلد جھلس جاتی ہے۔ لہٰذا افطاری کے بعد اور سحری کے اوقات میں پانی کا بکثرت استعمال کیا جائے۔ اس سے جلد کو تازہ رکھا جاسکتا ہے۔ علاوہ ازیںگلیسرین کے استعمال سے بھی جلد کو تازہ کیا جا سکتا ہے۔

 ناخنوں اور بالوں کی صحت پر روزے کے مثبت اثرات:

انسانی جلد اور ناخنوں پر بھی روزے کے مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ ناخن، سرکے بالوں کی نشوونما اور ان کی مضبوطی میں اضافہ ہوتا ہے۔ انسانی اور چہرے کی رنگت پر مرتب ہونے والے اثرات ناخنوں پر بھی اثر انداز ہوتے ہیں۔ روزے کی حالت میں جسم ان ہارمونز کو پھیلاتا جو جلد کی خوبصورتی اور ناخنوں کی چمک اوربالوں کی مضبوطی کا موجب بنتے ہیں  یہاں تک کہ روزے سے انفیکشن ،بیکٹیریا کی روک تھام اور بڑھاپے کے خلاف مزاحمت پیداہوتی ہے۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ روزے کی وجہ سے زیادہ بھوک اور پیاس انسان کو طبی ضرورت سے زیادہ کھانے پینے پرمجبور کرسکتی ہے مگر سحری اور افطاری میں کھانے پینے میں اعتدال کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں