site
stats
پاکستان

سندھ اسمبلی: امداد پتافی کا وزیر اعظم کے لیے نازیبا الفاظ کا استعمال

کراچی: سندھ اسمبلی کا ایک اور اجلاس ہنگامہ آرائی کی نذر ہوگیا۔ صوبائی وزیر امداد پتافی نے جذباتی تقریر کرتے ہوئے وزیر اعظم کے لیے نازیبا الفاظ کا استعمال کردیا جس کے بعد ایوان مچھلی بازار بن گیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ اسمبلی کا اجلاس حسب معمول شور شرابے کا مرکز بنا رہا۔

رکن سندھ اسمبلی سہراب سرکی نے کہا کہ سندھ میں مردم شماری پر تحفظات ہیں۔ مردم شماری درست نہیں ہو رہی۔

انہوں نے کہا کہ خدشات نہ دیکھے گئے تو نتائج تسلیم نہیں کریں گے۔ ہمیں روزانہ کی بنیاد پر مردم شماری کے نتائج بتائے جائیں۔ خدشہ ہے کہ سندھ کو اقلیت میں تبدیل کردیا جائے گا۔

اجلاس میں اپوزیشن نے حسب معمول احتجاج شروع کردیا۔ اپوزیشن ارکان نے ڈپٹی اسپیکر کے خلاف گو شہلا گو کے نعرے لگائے۔

صوبائی وزیر امداد پتافی نے وزیر اعظم کے سندھ میں دوروں کے خلاف جذباتی تقریر کی جس کے دوران انہوں نے نازیبا زبان کا استعمال بھی کیا تاہم غلطی کا احساس ہونے پر معافی مانگی۔

بعد ازاں دیگر اراکین قومی اسمبلی نے امداد پتافی کی بات پر سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ کسی رکن اسمبلی کو ایسے الفاظ کا استعمال زیب نہیں دیتا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top