بشارالاسد کے بغیر شام کے مسئلے کا حل ممکن نہیں، روسی صدر پیوٹن -
The news is by your side.

Advertisement

بشارالاسد کے بغیر شام کے مسئلے کا حل ممکن نہیں، روسی صدر پیوٹن

نیویارک : روسی صدرپیوٹن نے جنرل اسمبلی میں دنیا کو واضح پیغام دیا ہے کہ بشارالاسد کے بغیر شام کے مسئلے کا حل ممکن نہیں، جبکہ براک اوباما کا کہنا ہے کہ روس اور ایران سمیت مسئلے کےحل کیلئے کسی کیساتھ بھی کام کرنے کو تیار ہیں.

شام میں جاری امریکی اور روسی اتحاد کی خطے کو کنٹرول رکھنے کی کوشش نے شامیوں کو اپنا ملک چھوڑنے پر مجبور کر دیا ہے، شامی شہریوں کی ہجرت سے دنیا کی توجہ شام کی جانب ہو گئی ہے، لگتا ہے دنیا اب ان دو بڑی طاقتوں کے تنازعے کو مزید وقت دینا نہیں چاہتی ۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب میں روسی صدر نے بشار الاسد کی حمایت کرتے ہوئے دنیا پر واضح کردیا کہ اسد کے بغیر شامی تنازعے کا حل ممکن نہیں، پیوٹن کے مطابق شامی فوج اور کرد ملیشیا ہی داعش کو تباہ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں، انہوں نے شام اور عراق میں فوجی تعاون کا اعتراف کیا۔

پیوٹن نے خبردار کیا کہ شامی حکومت کیساتھ تعاون نہ کرنا غلطی ہوگی۔

امریکی صدر براک اوباما کا ردعمل تھا کہ روس اور ایران سمیت سب کے ساتھ تنازعات حل کرنا چاہتے ہیں۔اوباما کے مطابق داعش کے خاتمے کے لئے حالات سے سمجھوتا کرنا پڑے گا لیکن شام سے بشارالاسد کا خاتمہ بھی ایک مسئلہ ہے ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں