site
stats
عالمی خبریں

بشارالاسد کا ہر صورت ساتھ دیں گے، آپریشن جاری رہے گا، روس

ماسکو: روسی حکومت کے ترجمان نے شام میں ہونے والے کیمکل حملے کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ شامی صدر بشار الاسد کی فوج کا ساتھ ہر صورت دیں گے اور ملک مخالف دہشت گردوں کے خلاف ہر صورت آپریشن جاری رہے گا۔

روسی حکومت کے ترجمان کی جانب سے بیان اُس وقت سامنے آیا ہے کہ جب شام کے شہر ادلب پر مبینہ کیمیائی حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں اب تک جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 72 ہوگئی۔

امریکا، برطانیہ فرانس نے حملے کا ذمہ دار شامی حکومت کو ٹھہرایا ہے جبکہ اقوام متحدہ نے بھی اس معاملے پر ہنگامی اجلاس طلب کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ’’ شام میں کیمیائی حملے میں مرنے والوں کی تعداد 70 ہوگئی ‘‘

خیال رہے شام کافی عرصے سے جنگ کی لپیٹ میں تھا جس کے باعث ہزاروں شامی جاں بحق ہوئے اور متعدد زخمی ہوئے جبکہ حالات کے پیش نظر سینکڑوں افراد گھر چھوڑنے پر بھی مجبور ہوئے۔

مزید پڑھیں: ’’ شام میں جنگ بندی کا معاہدہ، روس نے فوج میں کمی کا اعلان کردیا ‘‘

واضح رہے شام میں جنگ بندی کے لیے روسی صدر نے گزشتہ برس شامی حکومت اور باغیوں کے درمیان مذاکرات کروائے تھے جس کے بعد روس نے شام میں موجود فوج کی تعداد میں کمی کا بھی اعلان کیا تھا۔

پڑھیں: ’’ سال 2016شامی بچوں کے لیے بدترین ترین سال رہا، اقوام متحدہ ‘‘

روسی صدر نے شامی حکام کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اعلان کیا تھا کہ شام میں جنگ بندی کے لیے اپوزیشن جماعتوں اور باغیوں کے درمیان معاہدہ طے ہوگیا ہے جس کی ضمانت روس اور ترکی نے لی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top