The news is by your side.

Advertisement

یورپ کو گیس کی فراہمی سے متعلق صدر پیوٹن کے الفاظ کی وضاحت

ماسکو: یورپ کو گیس کی فراہمی سے متعلق صدر پیوٹن کے الفاظ کی وضاحت کرتے ہوئے روس نے کہا ہے کہ یورپ کو براستہ بیلاروس گیس فراہمی کم کرنے کا کوئی ارادہ نہیں۔

تفصیلات کے مطابق کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوف نے میڈیا کو بتایا کہ بیلاروس کے راستے یورپ کو گیس کی ترسیل کے بارے میں روسی صدر ولادی میر پیوٹن کے الفاظ کا یہ مطلب نہیں ہے کہ ماسکو نورڈ اسٹریم 2 کے شروع ہونے کے بعد بیلاروس کے ذریعے گیس سپلائی کم کر سکتا ہے۔

قبل ازیں صدرپوتن نے امید ظاہر کی تھی کہ مینسک یورپی یونین کے ممالک کو روسی گیس کی ترسیل کو منقطع نہیں کرے گا۔

ولادی میر پیوٹن کا کہنا تھا کہ بیلاروس کی جانب سے یک طرفہ طور پر یورپ کو روسی گیس کی فراہمی میں رکاوٹ سے نہ صرف یورپی توانائی کے شعبے کو نقصان پہنچے گا، بلکہ اس سے بیلاروس کے ایک ٹرانزٹ ملک کے طور پر روس کے ساتھ تعلقات پر بھی منفی اثر پڑے گا۔

‏’یورپی یونین کو گیس کی ترسیل بند کر دیں گے‘‏

یاد رہے کہ تین دن قبل بیلاروس کے صدر الیگزینڈر لوکاشینکو نے اعلان کیا تھا کہ اگر یورپی یونین ‏نے اس کے ملک پر پابندیاں عائد کیں تو وہ یورپ کو گیس کی ترسیل منقطع کر دیں گے۔

صدر الیگزینڈر نے کہا کہ ہم یورپ کو سرد موسم میں گیس فراہمی کے ذریعے گرم رکھنے کی سہولت دیتے ہیں ‏اور وہ بدلے میں سرحدیں بند کرنے کی دھمکی دیتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں