The news is by your side.

Advertisement

روس نے یورپی ملک کو گیس کی فراہمی روک دی

ماسکو: روس نے یورپی ملک نیدرلینڈز کو گیس کی فراہمی روک دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق نیدرلینڈز کی جانب سے روسی کرنسی روبل میں ادائیگی نہ کرنے کے فیصلے کے بعد روس نے نیدرلینڈز کو نیچرل گیس کی فراہمی روک دی۔

نیدرلینڈز چوتھا یورپی ملک بن گیا ہے جسے روس نے گیس کی فراہمی روک دی ہے، روس کے توانائی کے بڑے ادارے گیزپارم نے منگل کو اعلان کیا کہ اس نے ڈچ ریاست کے توانائی کے ہول سیلر کو گیس کی سپلائی مکمل طور پر روک دی ہے۔

ڈچ کمپنی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ گیس سپلائی بند ہونے کا مطلب ہے کہ یکم اکتوبر 2022 کو معاہدہ ختم ہونے کی تاریخ تک جتنی گیس کا معاہدہ ہوا ہے، وہ فراہمی نہیں ہو سکے گی۔

یاد رہے کہ اس سے قبل اپریل کے آخر میں روسی کمپنی نے بلغاریہ اور پولینڈ کو گیس کی برآمدات معطل کی تھیں، اور مئی میں فن لینڈ کو بھی گیس کی فراہمی منقطع کر دی تھی، اور اب روبل میں ادائیگی کی مانگ کو مسترد کرنے پر ڈنمارک کو بھی سپلائی روکے جانے کا سامنا ہے۔

ماسکو کی نئی ادائیگی اسکیم کے تحت ‘غیر دوست’ ممالک سے گیس کی ادائیگیاں صرف روسی کرنسی میں قبول کی جا رہی ہیں، یہ وہ ممالک ہیں جنھوں نے گیزپارم بینک میں اکاؤنٹ کھولنے پر پابندیاں عائد کر رکھی ہیں۔

اس ماہ کے شروع میں جرمنی اور اٹلی نے مبینہ طور پر قومی کمپنیوں کو قدرتی گیس کی ادائیگی کی نئی اسکیم کی تعمیل کرنے اور سپلائی میں کٹوتی سے بچنے کے لیے روس کے گیزپارم بینک کے ساتھ روبل اکاؤنٹس کھولنے کی اجازت دی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں