The news is by your side.

Advertisement

روس امریکا کے ساتھ تخفیف اسلحہ سے متعلق معاہدے کے لیے تیار

ماسکو: روس امریکا کے ساتھ تخفیف اسلحے کے کسی نئے ممکنہ معاہدے کے لیے تیار ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق کریملن کے ایک مشیر یوری اوشاکوف نے یہ بات ایسی خبریں سامنے آنے کے بعد کہی ہے جن میں بتایا گیا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ روس اور چین کے ساتھ اسلحے کے دوڑ روکنے کے لیے مذاکرات کرنا چاہتے ہیں۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اتوار کے روز روسی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اوشاکوف کا یہ بھی کہنا تھا کہ نئے معاہدے سے قبل امریکا کو پہلے سے طے شدہ معاہدوں کی پاسداری کرنا ہوگی۔

امریکی صدر نے رواں برس ہی سن 1987 میں طے پانے والے معاہدے آئی این ایف سے یکطرفہ اخراج کا اعلان کیا تھا۔

امریکا اور روس کے درمیان ہتھیاروں میں کمی کے معاہدے کی مرکزی حدود کے نئے مرحلے کا نفاذ گذشتہ سال فروری کو ہوا تھا، بعد ازاں واشنگٹن نے روسی حکومت کو واضح کیا تھا کہ وہ اس نئے مرحلے کا بھی احترام کرے۔

واشنگٹن میں وزارت خارجہ کے ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ امریکا نے تخفیف اسلحہ کے وفاق روس کے ساتھ طے پانے والے معاہدے کا سات برس تک احترام کیا ہے، روس کو چاہیے کہ وہ بھی نئے مرحلے کا احترام یقینی بنائے تاکہ دوطرفہ تعلقات میں تناؤ پیدا نہ ہو۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں