The news is by your side.

Advertisement

روس، امریکا کے سامنے ڈٹ گیا

ماسکو: روس نے متنبہ کیا ہے کہ امریکا ہم سے طاقت کی زبان میں بات کرنے کی جرت نہیں کرسکتا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق روسی دارالحکومت ماسکو میں صدر ولادی میر پیوٹن کی کریملن کہلانے والی سرکاری رہائش گاہ کے ترجمان نے دوٹوک مؤقف اختیار کیا ہے کہ روس سے امریکا یا کسی بھی دوسرے ملک کو “طاقت کی زبان میں” بات کرنے نہیں دیں گے۔

کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوف کا ایک انٹرویو میں کہنا تھا کہ امریکا ایک منتر کی طرح یہ ہی ورد دہراتا رہتا ہے کہ ہم سب ممالک کے ساتھ طاقت کی زبان میں بات کریں گے، روس اپنے ساتھ ایسا کرنے نہیں دے گا۔

انہوں نے بتایا کہ روسی صدر یا دیگر قیادت امریکیوں کو اس زبان میں بات کرنے کی اجازت نہیں دے گی۔

دمتری پیسکوف کا کہنا تھا کہ امریکا کی اتنی جرت نہیں کہ وہ ہم سے اس انداز میں پیش آئے۔

دوران انٹرویو واشنگٹن سے سفارتی تعلقات کے خاتمے سے متعلق پوچھے گئے سوال پر کہ مستقبل میں ایسا ہوگا یا نہیں، ترجمان نے کہا امریکا اور روس کے درمیان انتہائی بدترین صورتحال کے بارے میں ابھی بات نہیں کرنا چاہتا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں