The news is by your side.

Advertisement

روس یوکرین مذاکرات کا دوسرا دور بھی بے نتیجہ ختم

روس اور یوکرین کے درمیان جنگ بندی کے لیے مذاکرات کا دوسرا دور بھی بے نتیجہ ختم ہو گیا۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق پولینڈ اور بیلا روس کی سرحد پر روس اور یوکرین کے درمیان آج ہونے والا مذاکرات کا دوسرا دور اپنے اختتام کو پہنچ چکا تاہم دونوں ممالک کے وفود کے درمیان فوری طور پر جنگ بندی پر اتفاق نہ ہوسکا۔

یوکرینی وفد کا کہنا ہے کہ جنگ بندی پر کوئی پیش رفت نہیں ہوئی جب کہ روس وفد کا کہنا ہے کہ شہریوں کے محفوظ انخلا کے لیے انسانی کوریڈور کے قیام پر اتفاق ہوا ہے۔ دونوں ممالک نے مذکرات کا سلسلہ جاری رکھنے پر اتفاق کرلیا ہے۔

روس کے صدر ولادیمیر پیوٹن نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ یوکرین آپریشن منصوبے کے مطابق چل رہا ہے، یوکرین میں تمام اہداف حاصل کر لیے ہیں۔

دوسری جانب اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ہنگامی اجلاس میں یوکرین پر روسی حملے کے خلاف قرارداد منظور کرلی گئی ہے۔

جنرل اسمبلی کا خصوصی اجلاس اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی جانب سے بلایا گیا تھا۔ جنرل اسمبلی کے 193 ارکان میں سے 141 نے روس کے خلاف قرار داد کی حمایت کی، قرار داد میں یوکرین کے خلاف روسی جارحیت کی مذمت ، روس سے جنگ بندی اور افواج کی واپسی کا مطالبہ کیا گیا۔

پانچ رکن ممالک نے روس کے خلاف قرار داد کی مخالفت کی، جبکہ چین سمیت پینتیس ممالک اجلاس سے غیر حاضر رہے، روس، بیلاروس، ایریٹریا، شام اور شمالی کوریا قرارداد کے خلاف ووٹ دینے والے ممالک میں شامل تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں