The news is by your side.

Advertisement

یوکرین پر حملہ کیوں کیا؟ روسی صدر نے تہلکہ خیز انکشاف کردیا

ماسکو: روسی صدر ولادی میر پیوٹن نے یوکرین پر فوجی آپریشن کو درست فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ یوکرین کی جانب سے بڑے پیمانے پر حملے کی منصوبہ بندی کی جا رہی تھی۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق ولادی میر پیوٹن نے ماسکو کے ریڈ اسکوائر میں یوم فتح کی پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے یوکرین جنگ کے اسباب پر کھل کر گفتگو کی اور کہا کہ یوکرین میں کارروائی کا مقصد روس مخالف ایک جارحانہ عمل کے خلاف ایک پیشگی اقدام تھا۔

روسی صدر نے الزام عائد کیا کہ یوکرین کی جانب سے بڑے پیمانے پر حملے کی منصوبہ بندی کی جا رہی تھی، ہم نے یوکرین میں فوجی انفراسٹرکچر کو کھلتے دیکھا، سینکڑوں غیر ملکی فوجی ماہرین اپنا کام شروع کر رہےتھے جبکہ نیٹو ممالک سے جدید ترین ہتھیاروں کی باقاعدہ ترسیل ہوتی تھی، یہ سب معاملات روس کے لیے خطرہ پیدا کررہے تھے۔

یوم فتح پریڈ سے خطاب میں پیوٹن نے انکشاف کیا کہ دونباس میں ہماری تاریخی زمینوں بشمول کریمیا پر حملہ کرنے کی مکمل تیاریاں تھیں، ہم کسی صورت انیس سو چالیس کی سوویت قیادت کی غلطیوں کو نہیں دہرانا چاہتے۔

یہ بھی پڑھیں: یوکرین میں اسکول پر بمباری، 60 افراد ہلاک

روسی صدر نے نشاندہی کی سوویت یونین نے نازی جرمنی کو سب سے فوری اور واضح تیاریوں سے گریز یا ملتوی کرکے اسے مشتعل نہ کرنے کی کوشش کی جو اسے ایک آسنن حملے سے اپنے دفاع کے لیے کرنی تھی، نتیجے کے طور ملکی دفاع کا لمحہ ضائع ہوگیا اور سوویت یونین پر جرمن فوج نے حملہ کردیا جبکہ ملک حملے کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار نہیں تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ جنگ عظیم دوم سے پہلے جرمنی کو مطمئن کرنے کی کوشش ایک غلطی ثابت ہوئی جس کی ہمارے لوگوں کو بھاری قیمت ادا کرنی پڑی، ہم دوسری بار یہ غلطی نہیں کریں گے، ہمیں ایسا کرنے کا کوئی حق نہیں ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں