The news is by your side.

Advertisement

روسی گیس کا متبادل یورپ کے پاس نہیں ہوسکتا

لندن : برطانیہ کی معروف پیٹرولیم کمپنی شیل کے سی ای او بین وین بیئرڈن نے کہا ہے کہ یورپی ممالک توانائی کی منتقلی کے بغیر روسی قدرتی گیس کا متبادل نہیں حاصل کرسکیں گے۔

وین بیئرڈن نے کہا کہ افریقہ اوراسکینڈینیویا سے گیس کی سپلائی میں اضافہ نیز مائع قدرتی گیس (ایل این جی) کی خریداری کو بڑھانا یورپی منڈیوں میں روسی توانائی کو تبدیل کرنے میں مدد نہیں کرسکتا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق انہوں نے مزید کہا کہ مزید ایل این جی کو مارکیٹ میں لانا، لیکویفیکشن اور ری گیسیفیکیشن کی صلاحیت میں اضافہ، اور شمالی افریقہ اور ناروے سے پائپ لائن کی سپلائی میں اضافہ معقول چیزیں ہیں لیکن اس دوران توانائی کی منتقلی کا ہونا بھی ناگزیر ہے۔

شیل کے سربراہ کے مطابق ہمارے پاس اس وقت استعمال ہونے والی روسی گیس کو مکمل طور روک کر اس کا متبادل تلاش کرنے کے لیے مزید گیس اور ایل این جی خریدنے کا کوئی طریقہ نہیں ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں