The news is by your side.

Advertisement

روسی گیس کی بندش، جرمنی نے شہریوں کو خبردار کردیا

برلن : جرمنی کو روس کی جانب سے گیس کی ترسیل میں کافی حد تک کمی کے براہ راست اثرات جرمنی کی معیشت پر پڑے جس کے سبب مہنگائی میں روز بروز اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔

جرمنی نے توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے ہنگامی اقدامات کا بھی اعلان کیا جس میں کوئلے کے استعمال میں اضافہ بھی شامل ہے۔

اس سلسلے میں جرمنی کے وزیر معیشت رابرٹ ہیبک نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ جرمنی میں اس وقت گیس قلت کی شکار اشیاء میں سے ایک ہے۔

انہوں نے کہا کہ روس کی جانب سے گیس کی سپلائی میں کی جانے والی کمی کو دیکھتے ہوئے ملک کے ایمرجنسی گیس پلان کا الرٹ لیول بڑھایا جاسکتا ہے۔

دوسری جانب یورپی یونین میں شامل کئی ممالک کی معاشی ترقی میں جون کے مہینے میں شدید گراوٹ دیکھنے میں آئی ہے۔

گزشتہ دنوں ہونے والے سروے کے نتائج کے مطابق اشیاء کی بڑھتی ہوئی قیمتوں نے کورونا وبا کے بعد معمول پر آنے والی معیشت کو ایک بار پھر بڑے چیلنج سے دوچار کردیا ہے۔

ایس اینڈ پی گلوبل کے چیف بزنس اکانومسٹ کرس ولیمسن نے کہا ہے کہ معاشی سرگرمی میں سست روی کی بڑی وجہ قیمتوں میں ہونے والا اضافہ ہے۔

کرس ولیمسن کے مطابق یہ سال2008 کے عالمی معاشی بحران کے بعد سب سے زیادہ غیرمتوقع صورت حال ہے۔

واضح رہے کہ رواں برس فروری میں روس کی جانب سے یوکرین میں خصوصی ملٹری آپریشن کے آغاز سے ہی یورپ کے ممالک کو گیس کی فراہمی کے حوالے سے خدشات کا سامنا ہے۔

امریکہ اور یورپی ممالک کی اکثریت یوکرین کی حمایت کر رہے ہیں جبکہ گیس کے لیے ان میں سے زیادہ تر ملکوں کا انحصار روس پر ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں