The news is by your side.

Advertisement

روس یوکرین جنگ : راکٹ چرانا شہری کو مہنگا پڑگیا

خارکیف : یوکرین اور روس کے درمیان جاری جنگ میں اب تک ہزاروں افراد اپنی جان سے ہاتھ دھوچکے ہیں جبکہ اتنی ہی تعداد میں زخمی شہری مختلف اسپتالوں میں زندگی و موت کی کشمکش میں مبتلا ہیں۔

ان حالات میں یوکرین کے محب وطن شہری اپنے ملک کی حفاظت اور روسی افواج کے خلاف لڑنے کے لیے فوج میں شامل ہورہے ہیں۔

اس دوران ایک عجیب و غریب واقعہ پیش آیا کہ جس میں یوکرین کے ایک علاقے سے مقامی شہری کو ایک غیر استعمال شدہ راکٹ ملا جسے اس نے اپنی کار میں رکھ لیا۔

غیرملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق شاید یہ شخص اس راکٹ کو ایک یادگار کے طور پر یا اسے فروخت کرنے کی غرض سے لے جا رہا تھا۔ مذکورہ شخص اس راکٹ کو روسی سرحد کی جانب لے جا رہا تھا کہ وہ راستے میں زور دار دھماکے سے پھٹ گیا۔

مقامی میڈیا کے مطابق یہ افسوسناک واقعہ ماسکو سے صرف 10 میل شمال مشرق میں واقع شہر میچشچی

میں پیش آیا۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تصاویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ کار کا پچھلا حصہ مکمل طور پر تباہ ہوگیا، اس حادثے میں دو افراد زخمی ہوئے جنہیں فوری طور پر مقامی اسپتال میں طبی امداد فراہم کی گئی۔

مقامی میڈیا نے زخمی ہونے والوں میں سے ایک شخص کی شناخت 52 سالہ ریٹائرڈ میجر وکٹر کووٹیکوف کے نام سے کی گئی ہے جس کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ وہ ڈونباس میں انسانی امداد لے کر جا رہا تھا۔

خبر کے مطابق بظاہر اس ریٹائرڈ میجر نے اس سے قبل محصور علاقے سے ایک گرینیڈ بھی خریدا تھا اور اسے فروخت کرنے کے ارادے سے روس واپس لارہا تھا۔

اس واقعے میں شدید زخمی ہونے والا دوسرا شخص 38 سالہ نکولے پوڈوبرازنی ہے جس کی حالت تشویشناک ہے مزکورہ زخمی انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں زیر علاج ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں