The news is by your side.

Advertisement

امریکا میں فلم سیٹ پر اصلی گولیاں چلنے، خاتون کی ہلاکت کا معاملہ سنگین ہو گیا

نیو میکسیکو: امریکا میں فلم سیٹ پر اصلی گولیاں چلنے، اور خاتون سینیماٹوگرافر کی ہلاکت کا معاملہ سنگین ہو گیا، امریکی اداکار اور پروڈیوسر ایلیک بالڈوِن کے ہاتھوں اصلی گولیاں چلنے اور خاتون کے مرنے پر امریکی پولیس کا کہنا ہے کہ واقعے کے خلاف مجرمانہ دفع لگائی جا سکتی ہے۔

ایک ہفتے قبل اداکار ایلیک بالڈون نے فلم ‘رَسٹ’ کے سیٹ پر غلطی سے سنیماٹوگرافر ہالینا ہچنز کو گولی مار کر ہلاک اور ایک ہدایت کار کو زخمی کر دیا تھا۔

نیو میکسیکو کے ایک ڈسٹرکٹ اٹارنی میری کارمیک کا کہنا ہے کہ آنے والی ہالی ووڈ فلم Rust کے سیٹ پر حادثاتی فائرنگ کے واقعے پر باقاعدہ مجرمانہ دفعات لگائی جا سکتی ہیں۔

تفتیش کاروں کا کہنا ہے کہ فلم سیٹ کی سیکیورٹی پر ہم مکمل مطمئن نہیں ہیں، ہمیں سیٹ پر دیگر لائیو راؤنڈز ہونے کا بھی شبہ ہے، پولیس نے اب تک 600 شواہد برآمد کیے ہیں، جن میں تین گولہ بارود کے 500 آتشیں اسلحے کے راؤنڈ شامل ہیں۔

ایلیک بالڈوِن

پولیس حکام کے مطابق حقائق واضح ہیں، ایک ہتھیار مسٹر بالڈون کو دیا گیا جو فعال تھا، اور اس نے براہ راست گولی چلا کر مس ہچنز کو ہلاک کر دیا اور مسٹر سوزا کو زخمی کر دیا۔

پولیس حکام اب اس بات کا تعین کر رہے ہیں کہ ہتھیار وہاں کیسے پہنچے، اتنا اسلحہ وہاں کیوں تھا، کیوں کہ اسے وہاں نہیں ہونا چاہیے تھا۔ ان کا کہنا ہے کہ زخمی ڈائریکٹر کے کندھے پر لگنے والی گولی بھی نکال کر تفتیش کے لیے دے دی گئی ہے۔

ہالینا ہچنز

تفتیش کاروں کے مطابق شوٹنگ کے وقت سیٹ پر 100 کے قریب لوگ موجود تھے، یہ بھی ثابت ہوا ہے کہ پستول اداکار کو پکڑانے سے پہلے اسے دو لوگوں نے پکڑا تھا۔

دوسری جانب فلم کی شوٹنگ کے دوران اصلی گولی چلنے کے بعد ہالی ووڈ فلمز سیٹ پر سیکیورٹی پر سوالات اٹھائے جا رہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں