تاریخی ملاقات کے بعد جنوبی اور شمالی کوریا کے درمیان تعلقات میں بہتری آنے لگی
The news is by your side.

Advertisement

تاریخی ملاقات کے بعد جنوبی اور شمالی کوریا کے درمیان تعلقات میں بہتری آنے لگی

سیئول: شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان اور جنوبی کوریا کے سربراہ مون جے ان کے درمیان ہونے والی تاریخی ملاقات کے بعد دونوں ملکوں کے تعلقات میں بہتری آنے لگی۔

تفصیلات کے مطابق شمالی اور جنوبی کوریائی ممالک گذشتہ کئی سالوں سے ایک دوسرے کے حریف رہے ہیں، ماضی میں ایک دوسرے کے ملکوں کو تباہ کرنے جیسی سنگین دھمکیاں بھی دے چکے تھے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق جنوبی کوریائی صدر کے خصوصی مندوب آج شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ ان سے ملاقات کریں گے اور جنوبی کوریا کے صدر کا خط انہیں پیش کریں گے۔

مذکوہ خط سے متعلق حکام نے کوئی تفصیلات فراہم نہیں کیں، جبکہ بین الاقوامی تعلقات کے ماہرین کا کہنا ہے کہ مون جے ان شمالی کوریا کے جوہری ہتھیاروں کے حوالے سے اپنا پیغام دیں گے۔

خیال رہے کہ مون جے ان اور کم جونگ ان نے تاریخی ملاقات رواں سال اپریل میں کی تھی، صدر شمالی کوریا خصوصی ملاقات کے لیے جنوبی کوریا پہنچے تھے۔

کم جونگ ان کی جنوبی کوریا آمد، پرتباک استقبال، تاریخی ملاقات

بعد ازاں دونوں رہنماؤں نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے باہمی جنگ کے خاتمے کے اعلان کے ساتھ ساتھ جوہری ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ پر بھی اتفاق کیا تھا۔

واضح رہے کہ سرحدی علاقوں میں لوگوں کی جانب سے دونوں رہنماؤں کی ملاقات کے حق اور مخالفت میں مظاہرے بھی کیے گئے تھے، جبکہ عالمی ماہرین نے موقف اختیار کیا تھا کہ دونوں رہنماؤں کی ملاقات خطے کے لیے موثر ثابت ہوگی اور جنگی صورت حال کے خاتمے کا پہلا قدم ہوگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں